لاکھوں درخواستیں‘ پبلک سروس کمشن نے اگلے سال تک نئی پوسٹوں پر پابندی لگا دی

لاہور (معین اظہر سے) بےروزگاری میں تیزی سے اضافے کی وجہ سے پنجاب پبلک سروس کمشن کو پوسٹوں پر بھرتی کے لئے لاکھوں کی تعداد میں درخواستیں آنی شروع ہو گئی ہیں جس پر پنجاب پبلک سروس کمشن نے تمام محکموں پر اگلے سال تک نئی پوسٹیں بھجوانے پر پابندی عائد کر دی ہے اور کہا ہے کہ پنجاب پبلک سروس کمشن کے پاس 5 ہزار پوسٹوں کے لئے دو لاکھ 87 ہزار درخواستیں آئی ہیں جس کی وجہ سے پبلک سروس کمشن کے پاس بھرتی کے لئے عملہ نہیں ہے اس لئے اب 31 دسمبر تک کوئی محکمہ اپنی ریکوزیشن نہ بھجوائے۔ تفصیلات کے مطابق پنجاب پبلک سروس کمشن کے سیکرٹری نے تمام صوبائی محکموں کے سربراہوں کو ایک لیٹر جاری کیا ہے جس میں انہوں نے کہا ہے کہ محکموںکی طرف خالی اسامیوں پر بھرتی کے لئے تیزی سے بے شمار ریکوزیشنز وصول ہو رہی ہیں اس وقت بھی پبلک سروس کمشن کے پاس 86 ریکوزیشن پینڈنگ پڑی ہوئی ہیں جن میں سے 18 ریکوزیشن اس وقت ایڈورٹائزنگ کے پراسیس میں ہیں۔ ہر پوسٹ پر بھرتی کے لئے ریکارڈ تعداد نے درخواستیں دینی شروع کر دی ہیں اور ایک پوسٹ پر ہزاروں کی تعداد میں لوگ درخواستیں دے رہے ہیں جس کے لئے پبلک سروس کمشن کے پاس اتنی تعداد میں عملہ ہی موجود نہیں ہے کہ وہ اس پراسیس کو تیزی سے چلا سکے۔ اس بارے میں ذرائع نے بتایا ہے کہ بےروزگاری میں اتنی تیزی سے اضافہ ہوتا جا رہا ہے کہ پہلے ایک پوسٹ کے مقابلے میں درجنوں درخواستیں آتی تھیں لیکن اب ایک پوسٹ کے مقابلے میں ہزاروں درخواستیں آرہی ہیں۔ اعداد و شمار کے مطابق پولیس میں اسسٹنٹ سب انسپکٹر کی گریڈ 9 کی 728 پوسٹیں ایڈوٹائز کی گئی تھیں جس پر 69 ہزار 859 درخواستیں آئی ہیں۔ گریڈ 17 میں ہیڈ ماسٹر کی 33 اسامیوں کو ایڈوٹائز کیا گیا تھا جس پر 2017 درخواستیں آئی ہیں۔ ایجوکیٹر کی گریڈ 16 میں 75 اسامیاں ایڈوٹائز کی گئی ہیں جن میں 7352 درخواستیں آئی ہیں۔ انسپکٹر انٹی کرپشن کی گریڈ 16 میں 13 پوسٹیں ایڈوٹائز کی گئی ہیں جن پر 10 ہزار 603 درخواستیں آئی ہیں۔ اسی طرح دیگر پوسٹوں کے لئے بھی ہزاروں کی تعداد میں درخواستیں موصول ہوئی ہیں۔