بھارت جدید اسلحہ صرف پاکستان کے خلاف جمع کر رہا ہے: دفاعی تجزیہ کار

لاہور (خبر نگار) دفاعی تجزیہ کاروں نے کہا ہے کہ بھارت جدید ترین اسلحہ صرف پاکستان کے خلاف اکٹھا کر رہا ہے‘ چین سے لڑ کر وہ جیت نہیں سکتا جبکہ نیپال‘ سکم‘ بھوٹان‘ برما‘ بنگلہ دیش کا بھارت سے مقابلہ نہیں ہے‘ ایٹم بم بھارت کے خلاف ڈیٹرنٹ ہے مگر ہمیں روایتی ہتیھاروں میں بھی بھارت کا مقابلہ کرنے کی صلاحیت بڑھانا ہو گی۔ بھارت کے جدید جنگی جہازوں اور دیگر اسلحہ کی خریداری پر اربوں روپے خرچ کئے جانے کے حوالے سے نوائے وقت سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے جنرل (ر) فیض علی چشتی نے کہا کہ بھارت کو اپنے پڑوسیوں میں صرف پاکستان ہی چبھتا ہے۔ وہ پاکستان کے ساتھ پہلے بھی جنگیں لڑ چکا ہے اور اب امریکی سٹرٹیجک پارٹنر بن کر پھر پاکستان کے ساتھ دو دو ہاتھ کرنا چاہتا ہے تاہم ہمیں بھارت سے ڈرنے کی بجائے اپنا ملک ٹھیک کرنے کی ضرورت ہے۔ ضروری یہ ہے کہ ہم ان کا سر کچلیں جو بکا¶ مال ہیں۔ جنرل (ر) افضل نجیب نے کہا کہ بھارت اس وقت دنیا میں روایتی ہتھیاروں کا سب سے بڑا خریدار ہے اس لئے ہمیں بھارت کے مقابلے کے لئے اپنی تیاری مکمل رکھنی چاہئے۔ بھارتی جتنا اسلحہ خرید رہے ہیں ہم اتنا نہیں خرید سکتے۔ ہماری اور بھارتی فوج میں تعداد کے علاوہ اسلحہ کے حوالے سے بھی فرق بہت زیادہ ہے لہٰذا ہمیں ایٹمی صلاحیت کو ڈیٹرنٹ کے طور پر ہی رکھنا ہو گا تاہم روایتی ہتھیاروں میں بھی بھارت کا مقابلہ کرنے کی صلاحیت ضرور بڑھانا ہو گی۔