طالبان سے مذاکرات پر شہدا کے لواحقین سمیت پوری قوم کو اعتماد میں لیا جائے: ثروت اعجاز

طالبان سے مذاکرات پر شہدا کے لواحقین سمیت پوری قوم کو اعتماد میں لیا جائے: ثروت اعجاز

لاہور (خصوصی نامہ نگار) پاکستان سُنی تحریک نے طالبان سے حکومتی مذاکرات پر دس سوالات کئے ہیں کہ مذاکراتی عمل کیلئے وطن عزیز میں دہشتگردی کے سب سے بڑے شکار مکاتب فکر اور جماعتوں کو اعتماد میں کیوں نہیں لیا گیا، سربراہ پاکستان سُنی تحریک محمدثروت اعجازقادری کی زیرصدارت مرکزاہلسنت پر مرکزی رہنمائوں اوراراکین رابطہ کمیٹی کے اہم ترین ہنگامی اجلاس میں طالبان سے حکومتی مذاکرات اور فریقین کے نمائندگان کے اعلان کے بعدکی صورتحال کاجائزہ لیاگیا۔اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے سربراہ سُنی تحریک محمدثروت اعجازقادری نے کہاکہ  مذاکراتی عمل پر قوم شدیدتشویش کا شکارہے، شہداء کے لواحقین سمیت پوری قوم کو اعتماد میں لیا جائے۔ مذاکراتی ڈرامے سے دہشتگرد وں کومزید منظم ہونے کا موقع ملے گا۔ کیا طالبان سے مذاکرات کیلئے کوئی ضمانت موجود ہے؟ اگر ہے تو وہ کون ہیں ؟ اگر طالبان کسی معاہدے کو توڑیں گے تو کیا طالبان کی نامزد کمیٹی اس کی ذمہ داری قبول کرے گی؟ حکومت کو مذاکرات کے بارے میں تفصیلات قوم کو بتانی چاہئیں۔