بیت المقدس آزاد کرانے کیلئے پاکستان کو مضبوط بنانا ہو گا: رانا مشہود

لاہور (سٹاف رپورٹر) وزیر تعلیم، سیاحت، امور نوجوانان، کھیل و آثار قدیمہ پنجاب رانا مشہود احمد نے کہا ہے کہ فلسطین، کشمیر، برما، افغانستان، مصر، عراق اور شام سمیت عالم اسلام کو درپیش تمام بڑے مسائل کی وجہ ”جرم ضعیفی“ ہے۔ ہم سب کو عہد کرنا چاہئے کہ آپس میں لڑنے کی بجائے مل کر دنیا میں اپنا مقام بحال کرائیں گے۔ اگر پاکستان کے مسلمان بیت المقدس کو یہودیوں کے قبضے سے چھڑانا چاہتے ہیں تو اس کا صرف ایک ہی طریقہ ہے کہ پاکستان کو مضبوط بنایا جائے۔ اتنا مضبوط کہ جب پاکستان سے فلسطین کی آزادی کی آواز بلند ہو گی تو دنیا بھر میں سنی بھی جائے گی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز مقامی ہوٹل میں ”قبلہ اول کی پکار‘ امت مسلمہ کی بیداری و اتحاد“ کے موضوع پر سیمینار سے خطاب میں کہی۔ سیمینار کے دیگر مقررین صوبائی وزیر خزانہ میاں مجتبیٰ شجاع الرحمن، ڈپٹی سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی پاکستان ڈاکٹر فرید احمد پراچہ، سیکرٹری جنرل مجلس وحدت المسلمین مولانا راجہ ناصر عباس، صدر پاکستان عوامی تحریک ڈاکٹر رحیق احمد عباسی، چیئرمین امامیہ آرگنائزیشن پاکستان لعل مہدی خان اور جرمنی میں پاکستان کے سابق سفیر میاں عبدالوحید بھی شامل تھے۔ رانا مشہود احمد نے خطاب میں کہا کہ پاکستان کو دفاعی، اقتصادی اور نظریاتی طور پر مضبوط تر بنائے بغیر ہم نہ اپنے عوام کو خوشحالی اور سربلندی سے ہمکنار کر سکتے ہیں اور نہ ہی دوسرے ممالک کے مظلوم مسلمانوں کی مدد کے قابل ہو سکتے ہیں۔ پاکستان کی مسلح افواج کا شمار دنیا کی 6 بڑی افواج میں ہوتا ہے لیکن ہم سے ڈرون حملے نہیں روکے جا سکے۔ پاکستان آج بھی بیرونی ڈکٹیشن لینے پر مجبور ہے کیونکہ ہم اکٹھے نہیں ہیں۔ ہمیں فرقہ واریت اور علاقائی نفرتوں کے ذریعے ذہنی طور پر بانٹ دیا گیا ہے۔ افغانستان آج ہماری بجائے مدد کے لئے بھارت کی طرف دیکھ رہا ہے۔ اصل بات یہ ہے کہ ہم اپنے دین سے دور ہو گئے ہیں۔ ہمیں فرقوں میں اسلام نے نہیں، ہمارے مذہبی رہنماﺅں نے تقسیم کیا ہے۔ جب تک اس ملک کی لوٹی ہوئی دولت واپس نہیں لائی جاتی، پاکستان کا احترام بحال نہیں ہو گا۔وہ وقت جلد آ جائے گا جب ہم اتنے طاقتور ہوں گے کہ قبلہ اول کی آزادی کا مطالبہ عالمی برادری کو پورا کرنا پڑے گا۔