حکومت امن کیلئے افغانستان میں بھارتی دہشت گردی اڈے ختم کرائے: حافظ سعید

لاہور (خصوصی نامہ نگار) امیر جماعۃ الدعوۃ پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید نے کہا ہے کہ  بھارت کشمیر کو اٹوٹ انگ قرار دیتا ہے تو پھرحکومت پاکستان کو بھی کھل کر کشمیریوں کی تحریک آزادی کا ساتھ دینا چاہئے۔ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم دن بدن بڑھتے جا رہے ہیں۔ نہتے کشمیریوں کو شہید کر کے اجتماعی قبروں میں دفن کیا جا رہا ہے۔ جماعۃ الدعوۃ ہزاروں زلزلہ متاثرین میں ایک ماہ کے راشن پیک تقسیم کر چکی ہے۔ متاثرہ علاقوں میں شہید ہونے والی مساجد ،کنویں اور ہینڈ پمپ ترجیحی بنیادوں پر تعمیر کئے جائیں گے۔ زلزلہ متاثرین کو خیموں اور خشک راشن کی اشد ضرورت ہے۔ قوم ایثار و قربانی کے جذبہ سے متاثرہ بھائیوں کی ہر ممکن مدد کرے۔ وہ گزشتہ روز مرکز القادسیہ چوبرجی میں جماعۃ الدعوۃ لاہور کے زیر اہتمام ایک تقریب سے خطاب کر رہے تھے۔ اس موقع پر  حافظ عبدالغفار المدنی، مولانا نصر جاوید، مولانا ابوالہاشم ،مولانا محمد ادریس فاروقی و دیگر نے خطاب کیا۔ حافظ محمد سعید نے کہا کہ پاکستان کے خلاف تخریب کاری اور شرارتوں میں بھارت  کا ہاتھ ہے اور وہ افغانستان میں بیٹھ کر منصوبہ بندی کرتا ہے۔ حکومت کو چاہئے کہ وہ پاکستان میں امن کے لئے افغانستان میں قائم بھارت کے دہشت گردی کے اڈے ختم کروائے۔ کشمیری و پاکستانی قوم کنٹرول لائن کو نہیں مانتی یہ کشمیریوں کے مفادات کے خلاف ہے۔ مسئلہ کشمیر کے حل کے دو راستے ہیں کہ عالمی برادری انڈیا پر دبائو ڈالے اور استصواب رائے کروائے یا پھر تحریک آزادی کا ساتھ دے۔ انہوں نے کہا کہ ہم پاکستان کو بھارت کا دست نگر اور بھارتی منڈی بنانے کی مخالفت کرتے ہیں۔ دفاع پاکستان کے لئے حکومت کو بھارت اور امریکہ کے خلاف دو ٹوک لہجہ اختیار کرنا ہو گا۔  زلزلہ سے ہزاروں افراد بے گھر ہوئے ہیں اور کھلے آسمان تلے پڑے ہماری امداد کے منتظر ہیں۔ ان حالات میں متاثرین زلزلہ کی مدد سے کسی صورت پیچھے نہیں رہنا چاہیے۔ زلزلہ متاثرین کے معمولات زندگی بحال ہونے تک ہر ممکن امدادی سرگرمیاں جاری رکھیں گے۔ مسلمان اپنی زندگیوں میں تبدیلی پیدا کریں۔