انتخابی وعدوں کا پول کھل گیا، بھوکے شیر ہر چیز کھا گئے: چودھری شجاعت

انتخابی وعدوں کا پول کھل گیا، بھوکے شیر ہر چیز کھا گئے: چودھری شجاعت

لاہور (خصوصی رپورٹر) ق لیگ کے مرکزی صدر چودھری شجاعت نے کہا ہے حکمرانوں کے انتخابی وعدوں کا پول کھل گیا ہے، بھوکے شیر ہر چیز کھا گئے ہیں، بلدیاتی الیکشن جماعتی ہوں یا غیر جماعتی ان میں حصہ لیں گے۔ وہ گزشتہ روز مسلم لیگ ہاﺅس میں ق لیگ کے مشاورتی اجلاس سے خطاب کر رہے تھے۔ اس موقع پر پارٹی کے مرکزی سینئر رہنما وسابق نائب وزیراعظم چودھری پرویزالہی، سیکرٹری جنرل مشاہد حسین سید، صدر سندھ حلیم عادل شیخ، صدر خیبر پی کے انتخاب خان چمکنی، ایس ایم ظفر، مسز فرخ خان، چودھری ظہیر الدین، عبدالکریم نوشیروانی، طارق بشیر چیمہ، سردار وقاص موکل، عامر سلطان چیمہ، خدیجہ عمر فاروقی، میاں عمران مسعود، ناصر گل، سیمل کامران، ماجدہ زیدی سمیت و دیگر نے خطاب کیا۔ چودھری شجاعت نے اپنے خطاب میں مزید کہا کہ مئی کے عام انتخابات کی حقیقت سامنے آ چکی ہے، ووٹنگ اور نتائج کی تیاری کے بارے میں سب کو پتہ چل چکا ہے لیکن ہم مایوس نہیں ہیں، ہم انتظامات ٹھیک کرکے بلدیاتی الیکشن میں خواہ جماعتی ہوں یا غیر جماعتی بھرپور حصہ لیں گے۔ انہوں نے کہا کہ بچھلی حکومت کچھ کرنا نہیں چاہتی تھی اور یہ کچھ کر نہیں سکتی، مہنگائی سے تنگ لوگ لالٹین جلانے پر مجبور ہوں گے۔ تخریب کاری پر اے پی سی میں سب جماعتوں سے ووٹ لے کر بھی ایک ماہ میں کوئی پیش رفت دکھائی نہیں دی، لوگ بڑی تعداد میں روزانہ جاںبحق ہو رہے ہیں۔ چودھری پرویزالہی نے کہا ہم نے آئی ایم ایف سے نجات حاصل کی تھی لیکن آج آئی ایم ایف سے وعدے پورے کرنے کے لئے یہ ملک میں مہنگائی کا طوفان لے آئے ہیں، عوام سے کئے گئے وعدے پورے کرنے تو کجا انہوں نے اب تک اس سمت میں کوئی پیش رفت بھی نہیں کی اور نہ ہی کوئی ہوم ورک سامنے آیا ہے، مینار پاکستان پر پنکھا لے کر بجلی کا رونا رونے اور 2 روپے کی روٹی کا واویلا کرنے والے بتائیں کہ آج وہ روٹی کہاں ہے، بجلی کے بل یہ جس رفتار سے بڑھا رہے ہیں اور آٹا مہنگا ہو رہا ہے عوام دعا کریں گے کہ لوڈشیڈنگ ہی رہے۔ مشاہد سید نے کہا ہم موجودہ نااہل حکومت کے حقیقی متبادل ہیں جو اہل قیادت اور اپنی صفوں میں ہر شعبہ میں ماہرین کی بڑی تعداد کے باعث قوم کو درپیش مسائل حل کر سکتے ہیں۔ علاوہ ازیں ق لیگ نے جمعرات کو مسلم لیگ ہاﺅس میں منعقد ہونے والے مشاورتی اجلاس میں ایک قرارداد میں پٹرولیم اور بجلی کی قیمتوں میں مسلسل اضافہ کی مذمت کرتے ہوئے اضافہ واپس لینے کا مطالبہ کیا ۔ ایک اور قرارداد میں پنجاب میں امن و امان کی ابتر صورتحال کا ذمہ دار ناقص حکومتی پالیسیوں کو قرار دیا گیا اور مطالبہ کیا گیا اشتہاریوں کو گرفتار کرنے کے لئے علیحدہ فورس بنائی جائے، محکمہ پولیس کی تنظیم نو کی جائے اور پولیس کے معاملات میں حکومتی مداخلت بند کی جائے۔ تیسری قرارداد میں پرویزالہی دور حکومت میں 2007 میں پنجاب میں ہسپتالوں، کالجوں، یونیورسٹیوں کے جو منصوبے شروع کئے گئے تھے انہیں بلاتاخیر مکمل کیا جائے۔ آئی این پی کے مطابق چودھری شجاعت اور پروےزالٰہی نے پارٹی کی تشکےل نو اور ےونےن کونسل کی سطح تک پا رٹی کی تنظےم سازی کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ حکو مت زےادہ دےر چلتی نظر نہےں آ رہی‘ حکمران امر ےکی ڈرون بند کروانے کی بجائے عوام پر مہنگائی اور بے روزگاری کے ڈرون حملے کر رہے ہےں‘ حکمران آئی اےم اےف کے اےجنڈے پر کام کر رہے ہےں جس کی وجہ سے ملک تباہی کی راہ پر گامزن ہے۔
چودھری شجاعت




چودھری شجاعت