پنجاب اسمبلی میں تحریک انصاف کے ارکان کے سر پر نااہلی کی تلوار لٹک رہی ہے

پنجاب اسمبلی میں تحریک انصاف کے ارکان کے سر پر نااہلی کی تلوار لٹک رہی ہے

لاہور (عدنان فاروق) پنجاب اسمبلی میں تحریک انصاف کے ارکان کی اسمبلی میں واپسی اور استعفے واپس لینے کے باوجود نا اہلی کی تلوار ان کے سرپر لٹک رہی ہے، ایوان سے تحریک انصاف کے ارکان کی مسلسل40غیر حاضریوں پر کسی بھی رکن کی جانب سے پی ٹی آئی کے ارکان کی نااہلی کی تحریک آنے اور زیر بحث ہونے پر معاملہ رکنیت کے خاتمہ تک جا سکتا ہے۔ اسمبلی رولز کے مطابق ایوان سے مسلسل40 غیر حاضریاں کرنے والا ممبر نا اہل ہو جاتا ہے، رولز36کے مطابق سپیکر نے ایوان کو اس حوالے سے آگاہ بھی کردیا ہے۔ اسمبلی سیکرٹریٹ سے پی ٹی آئی کے غیر حاضر رہنے والے ممبران کے خلاف تحریک جمع کرانے کے لئے 2ممبران نے فارم لئے ہوئے ہیں لیکن ابھی تک کسی ممبر کی طرف سے تحریک اسمبلی سیکرٹریٹ میں جمع نہیں کرائی گئی۔ اسمبلی رولز36 (1)کے مطابق جب کوئی ممبر ایوان سے مسلسل 40ایام غیر حاضر رہتا ہے، تو اس کے بارے میں سپیکر ایوان کو مطلع کرے گا جس پر اسمبلی کا کوئی بھی رکن ایوان میں تحریک جمع کرائے گا کہ ایوان سے غیرحاضر رہنے والے ممبر کی سیٹ خالی قرار دی جائے، ذیلی قاعدہ(1) کے تحت 7 روز کے بعد اس تحریک پر ایوان میں بحث ہو گی جس پر رائے لی جائے گی، ایوان کے پاس تین آپشن ہوں گے، اس تحریک کو منظور کرلے، مسترد کردے یا پھر ایوان کی اکثریت یہ کہے ابھی اس تحریک پر کوئی فیصلہ نہ لیا جائے اسے ایسے ہی رہنے دیا جائے۔ رولز37میں سپیکر ممبران کی حاضری شیٹ چیک کرنے کے لئے ایوان میں مہیا کرے گا۔ تاہم استعفوں کے منظور نہ کرنے کی طرح ان کی40غیر حاضریوں کے باوجود ممبران کو نااہل قرار دینے کا حتمی فیصلہ سپیکر نے ہی کرنا ہے اور پی ٹی آئی کے ممبران پر نااہلی کی یہ تلوار اسمبلی کی مدت ختم ہونے تک لٹکتی رہے گی یا جب تک کوئی بھی اسمبلی ممبر غیر حاضری کے خلاف ایوان میں تحریک جمع نہیں کراتا اور اس پر کوئی فیصلہ نہیں آجاتا۔
استعفے/ تلوار