سمن آباد : خاوند کے ہاتھوں جلائی جانیوالی خاتون دم توڑ گئی‘ ورثاءکا مظاہرہ

سمن آباد : خاوند کے ہاتھوں جلائی جانیوالی خاتون دم توڑ گئی‘ ورثاءکا مظاہرہ

لاہور (سٹاف رپورٹر) 30 سالہ خاتون کو آگ لگا کر قتل کرنے کا مقدمہ درج نہ کرانے پر مال روڈ پر پنجاب اسمبلی کے سامنے درجنوں افراد نے نعش رکھ کر پولیس کیخلاف احتجاجی مظاہرہ کیا۔ مظاہرے میں خواتین اور بچوں کی بڑی تعداد شامل تھی، مظاہرین کارروائی نہ کرنے پر پولیس کے خلاف نعرے بازی کرتے رہے۔ احتجاج کیو جہ سے ٹریفک جام ہو گئی اور گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگ گئیں۔ پولیس کی جانب سے کارروائی کی یقین دہانی پر مظاہرین نے احتجاج ختم کر دیا معلوم ہو اہے کہ 15روز قبل تھانہ سمن آباد کی رہائشی 30سالہ صدف کا گھریلو معاملے پر اپنے خاوند علی سے جھگڑا ہو گیا جس پر مبینہ طور پر علی نے پٹرول چھڑک کر صدف کو آگ لگا دی جس سے وہ بُری طرح جھلس گئی اور ہسپتال میں گذشتہ روز دم توڑ گئی صدف سمن آباد کی رہائشی تھی اسکے ورثاءنے تھانہ غازی آباد پولیس کو کارروائی کے لئے آگاہ کیا تو پولیس نے انکار کرتے ہوئے کہا کہ صدف نے سمن آباد میں دم توڑا ، مقدمہ متعلقہ تھانے میں درج ہو گا جبکہ سمن آباد پولیس نے ورثاءکو کہا کہ وقوع غازی آباد تھانے کی حدود میں ہوا مقدمہ ادھر ہی درج ہو گا دونوں تھانوں کے انکار پر ورثاءنے مال روڈ پر پولیس کیخلاف احتجاج شروع کر دیا پولیس کے اعلیٰ افسروں کی جانب سے تھانہ غازی آباد میں مقدمہ کے اندراج کی یقین دہانی پر ورثاءنے احتجاج ختم کر دیا۔
خاتون/ جاں بحق