روہنگیا مسلمانوں کی برما سے بیدخلی مہذب دنیا کے ماتھے پر دھبہ ہے: سراج الحق

لاہور (خصوصی نامہ نگار)جماعت اسلامی کے امیر سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ برما سے روہنگیا مسلمانوں کی بے دخلی اور اجتماعی قبروں کی دریافت مہذب دنیا کی پیشانی پر سیاہ دھبہ ہے، ہزاروں مسلمان پناہ کی تلاش میں سمندر میں بھٹک رہے ہیں مگر کوئی ملک انہیں قبول کرنے کے لیے تیار نہیں۔ اقوام متحدہ فوری طور پر اس مسئلے کے حل کے لیے آگے بڑھے اور میانمار کو پابند کیا جائے کہ وہ ملک بدری کا فیصلہ واپس لے اور مسلمانوں کو برما میں رہنے کی اجازت دی جائے۔ اپنے بیان میں سراج الحق نے عالم اسلام اور او آئی سی پر بھی زور دیا کہ وہ روہنگیا مسلمانوں کی حالت زار پر رحم کھائیں۔ اقوم متحدہ اور میانمار پر دبائو بڑھایا جائے کہ مسلمانوں کو برما سے بے دخل نہ کیا جائے۔ سراج الحق نے بنگلہ دیش ، ملائیشیا اور انڈونیشیا کی بے حسی پر دکھ کا اظہار کیا کہ وہ مصیبت زدہ مسلمانوں سے تعاون کرنے کے بجائے انہیں اپنی سرحدوں میں داخل ہونے سے روک رہے ہیں اور سمندر کی لہروں سے جانیں بچا کر خشکی پر پہنچنے والے مہاجرین کو بندوق کی نوک پر دوبارہ سمندر میں دھکیل دیا جاتا ہے۔ انہوں نے عالم اسلام اور او آئی سی سے اپیل کی کہ وہ بنگلہ دیش ، انڈونیشیا اور ملائیشیا کو روہنگیا مسلمانوں کی جانیں بچانے کے لیے اس مسئلہ کے حل تک انہیں اپنے پاس پناہ دیں اور ان کو رہائش، خوراک، لباس اور علاج کی سہولتیں دی جائیں۔