لاہورکی انسداد دہشت گردی عدالت نے چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ کی عدالت میں تصاویر بنانے والے شخص کو عدم ثبوت کی بناء پر بری کر دیا۔

خبریں ماخذ  |  سٹی رپورٹر
لاہورکی انسداد دہشت گردی عدالت نے چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ کی عدالت میں تصاویر بنانے والے شخص کو عدم ثبوت کی بناء پر بری کر دیا۔


پولیس کی جانب سے لاہور کی انسداد دہشتگردی کی عدالت میں چالان پیش کیا گیا جس میں عدالت کو بتایا گیا کہ ملزم رحیم سلیم سے دوران تفتیش دہشت گردی کے حوالے سے کوئی شواہد نہیں ملے اور نہ ہی اس کا تعلق کسی کالعدم تنظیم سے ثابت ہوا ہے جبکہ ملزم مکمل تفتیش کے بعد بے گناہ ثابت ہوا ہے ۔عدالت نے پولیس کے بیان کے بعد ملزم کے خلاف مقدمہ ختم کرتے ہوئے اسے رہا کرنے کے احکامات جاری کر دیئے۔ ملزم رحیم سلیم کو چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ جسٹس عمرعطاء بندیال کی عدالت میں موبائل فون پر تصاویر بناتے ہوئے گرفتار کر کے اسکے خلاف دہشت گردی کی دفعات کے تحت مقدمہ درج کیا گیا تھا۔