صوبوں کا ایشو ناقص حکومتی کارکردگی چھپانے کیلئے ہے: شاہ محمود

صوبوں کا ایشو ناقص حکومتی کارکردگی چھپانے کیلئے ہے: شاہ محمود

لاہور (خصوصی رپورٹر) پاکستان تحریک انصاف کے وائس چیئرمین مخدوم شاہ محمود قریشی نے قرار دیا ہے کہ کرپشن کے باعث پیپلز پارٹی کی حکومت اور بدانتظامی کے باعث مسلم لیگ ن کی حکومت عوام میں مقبولیت کھو چکی ہیں۔ اب عوام تبدیلی کے لئے عمران خان اور تحریک انصاف کی طرف دیکھ رہے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پاکستان تحریک انصاف کے سنٹرل میڈیا سنٹر میں مرکزی سیکرٹری اطلاعات شفقت محمود، خواتین رہنماﺅں طلعت نقوی اور ثانیہ ساجد کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ شاہ محمود نے مزید کہا ایف بی آر کی کارکردگی بہتر بنائی اور کرپشن پر قابو پا لیا جائے تو 900 ارب روپے بغیر کوئی ٹیکس لگائے پاکستان کے خزانے میں منتقل کئے جا سکتے ہیں۔ انہوں نے سوئس کیس، ایفی ڈرین کیس کے بعد سیف سٹی پراجیکٹس کے 21 ارب روپے کے سکینڈل کا ذکر کرتے ہوئے کہا کرپشن کے ریکارڈ کے باعث پیپلز پارٹی کی مقبولیت گری ہے۔ سرکلر ڈیٹ، لوڈ شیڈنگ اور لائن لاسز میں کمی نہیں کی جا سکی۔ 6 ہزار میگا واٹ بجلی کے شارٹ فال سے پاکستان کا ”بٹھہ“ بیٹھ گیا ہے۔ حکومت بین الاقوامی فنانشل اداروں کا اعتماد کھو چکی ہے۔ جی ڈی پی بائیس 22 فیصد سے گر کر ساڑھے بارہ 12½ پر آ گئی ہے۔ پیپلز پارٹی نے قوم کو مہنگائی، بے روزگاری اور غربت تین تحفے دئیے ہیں۔ نصف سے زیادہ آبادی غربت کی لکیر سے نیچے زندگی گزار رہی ہے۔ بلوچستان میں امن و امان کے قیام کےلئے حکومت مکمل طور پر ناکام ہو چکی ہے۔ نئے صوبوں کا جذباتی ایشو پیپلز پارٹی نے اپنی ناقص کارکردگی سے توجہ ہٹانے کے لئے کھڑا کیا۔ صوبوں کا مسئلہ صرف پنجاب تک محدود رکھنے سے پیپلز پارٹی کا سیاسی ڈرامہ بے نقاب ہو گیا ہے۔