جس علاقے کے لوگ نیا صوبہ مانگیں گے ان کا ساتھ دینگے: پیپلز پارٹی

جس علاقے کے لوگ نیا صوبہ مانگیں گے ان کا ساتھ دینگے: پیپلز پارٹی

لاہور (خبرنگار) پیپلز پارٹی کے رہنماﺅں کا کہنا ہے کہ پیپلز پارٹی وفاقی جماعت ہے جس بھی صوبے کے کسی حصے کے عوام اپنی الگ شناخت الگ صوبہ مانگیں پیپلز پارٹی ان کا ساتھ دے گی۔ ناہید خان نے کہا کہ نئے صوبے وقت کی ضرورت ہیں۔ مگر صوبوں کے قیام کا طریقہ کار آئین میں موجود ہے۔ سینٹ، قومی اسمبلی اور صوبائی اسمبلی جب تک دو تہائی اکثریت سے منظور نہیں کر لیتے نئے صوبے نہیں بنائے جا سکتے۔ ذوالفقار گوندل نے کہا کہ صرف پنجاب اسمبلی نے نئے صوبوں کی قرارداد منظور کی۔ اس لئے پنجاب میں کمیشن بنا دیا گیا۔ جب بلوچستان، سندھ، خیبر پی کے اسمبلی نے کسی نئے صوبے کے قیام کی قرارداد منظور نہیں کی تو کیسے وہاں نئے صوبے بنا دیں۔ بدقسمتی یہ ہے کہ مسلم لیگ (ن) نے پہلے متفقہ قرارداد منظور کی اب اس کی مخالفت کر رہے ہیں۔ شوکت بسرا، عزیزالرحمن چن اور اورنگزیب برکی نے کہا کہ نئے صوبے کی جہاں جہاں ضرورت ہے ضرور بنایا جائے گا۔