غیر حاضری، خواتین سے بدتمیزی پر ایس پی سمیت 70 اہلکاروں کے وارنٹ

لاہور (اپنے نامہ نگار سے) ایڈیشنل سیشن جج چودھری غلام مرتضیٰ نے 70 سے زائد پولیس اہلکاروں کے خلاف زیر سماعت مقدمات میں خود اور گواہان کو پیش نہ کرنے پر وارنٹ جاری کر دئیے اور انہیں گرفتار کر کے پیش کرنے کا حکم دیا۔ جن میں سرفہرست ایس پی ملتان شوکت عباس اور 2 ایس ایچ اوز شامل ہیں، ان کے خلاف مقدمہ میں خورشید بی بی کی جانب سے الزام لگایا گیا ہے کہ کچھ عرصہ قبل ایس پی ملتان شوکت عباس، سابق ایس ایچ او کنگن پور رضا شاہ اور ایس ایچ او مانگا منڈی محمد عثمان نے اس کے گھر میں گھس کر اس کی 2 بہوﺅں کے ساتھ انتہائی بدتمیزی کی جس پر فاضل عدالت نے ڈی آئی جی آپریشنزکو حکم دیا ہے کہ مذکورہ پولیس اہلکاروں کو گرفتار کر کے عدالت میں پیش کیا جائے۔ دیگر پولیس اہلکار جن کے وارنٹ جاری کئے گئے ہیں ان میں تھانہ شیراکوٹ کے انسپکٹر عبدالغفور، محرر فیض احمد، اے ایس آئی عرفان، تھانہ باٹا پور کے سب انسپکٹر گلزا احمد، تھانہ باغبانپورہ کے سب انسپکٹر فرحان علی، سعید اختر، کانسٹیبل محمد اعجاز اور محمد یوسف، تھانہ مانگا منڈی کے سب انسپکٹر محمد افضل، محمد اشرف، کانسٹیبل محمد افضل اور محمد امین، تھانہ راوی روڈ کے اے ایس آئی ذوالفقار، کانسٹیبل امجد حسین اور غلام مصطفیٰ، تھانہ شفیق آباد کے انسپکٹر امتیاز احمد بھٹی، سب انسپکٹر ریاض، اے ایس آئی فیض ربانی، کانسٹیبل شہباز احمد اور محمد انیس، تھانہ کاہنہ کے سب انسپکٹر زاہد خان اور کانسٹیبل محمد مقرنین، تھانہ اکبری گیٹ کے انویسٹی گیشن انچارج سب انسپکٹر محمد امجد، کانسٹیبل محمد ذوالفقار اور نذیر احمد، تھانہ ماڈل ٹاﺅن کے کانسٹیبل افضال احمد، طاہر نذیر اور ملک بشیر، تھانہ شاہدرہ کے سب انسپکٹر محمد اشرف و دیگر پولیس اہلکار شامل ہیں۔