تحریک انصاف اور عوامی تحریک کی مشترکہ تحریک کیلئے آخری کوشش، آج مفاہمت کا امکان

لاہور (جواد آر اعوان+ دی نیشن رپورٹ) تحریک انصاف اور عوامی تحریک کے رہنمائوں نے اپنے الگ الگ آزادی مارچ اور انقلاب مارچ کرتے ہوئے حکومت کیخلاف ایک مشترکہ تحریک چلانے کی آخری کوشش کی ہے۔ عوامی تحریک کے ایک مرکزی کارکن نے ’’دی نیشن‘‘ کو بتایا کہ عوامی تحریک اور تحریک انصاف کے درمیان آج اتوار کو اس حوالے سے کوئی مفاہمت ہو سکتی ہے۔ عوامی تحریک کے مرکزی رہنمائوں نے دونوں پارٹیوں کے مارچوں کے ایجنڈے میں کچھ مشترک بنیادیں تلاش کرنے کیلئے ملاقات کی۔ حالیہ رابطوں کے بعد امکان پیدا ہو گیا ہے کہ عمران خان اور شاہ محمود قریشی اتوار کے روز طاہر القادری سے ملاقات کریں اور آزادی مارچ اور انقلاب مارچ کے مشترکہ مطالبات کو حتمی شکل دے دیں۔ حکومت کے خلاف مشترکہ جدوجہد کا اعلان چودھری شجاعت اور پرویز الٰہی عوامی تحریک کے سیکرٹریٹ میں آج کر سکتے ہیں۔ اگر دونوں پارٹیاں مشترک بنیاد پر پہنچ جاتی ہیں تو 14اگست کو انقلاب مارچ کا اعلان کر دیا جائیگا۔ اگر دونوں پارٹیوں نے اپنے مارچوں کے چند نکات پر اتفاق کیا تو طاہر القادری انقلاب مارچ کا اعلان 12یا 13اگست کو بھی کر سکتے ہیں۔ اگر دونوں جماعتوں میں کسی بھی مسئلے پر اتفاق نہ ہوا تو انقلاب مارچ 14اگست کے بعد ہو گا۔ عوامی تحریک کے اہم رہنما کے مطابق آج کا دن حکومت کیلئے سیاسی طور پر ثابت ہو سکتا ہے۔