راولپنڈی اسلام آباد میٹرو کا ٹریک23کلو میٹر طویل، 24سٹیشن بنائے گئے ہیں

لاہور (فرخ سعید خواجہ) لاہور میٹرو پراجیکٹ کے بعد پاکستان کا دوسرا میٹرو پراجیکٹ راولپنڈی اسلام آباد منصوبہ پایہ تکمیل کو پہنچ گیا،23 کلو میٹر طویل ٹریک پر پاک سیکرٹریٹ سٹیشن اسلام آباد سے صدر سٹیشن راولپنڈی تک 24 اسٹیشن بنائے گئے ہیں، راولپنڈی اسلام آباد میٹرو پراجیکٹ کے باقاعدہ افتتاح سے پہلے وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے وفاقی وزیر اطلاعات سینیٹر پرویز رشید کی تجویز پر ملک بھر سے صحافیوں کو اسلام آباد میں اکٹھا کیا اور میٹرو بس کی پاک سیکرٹریٹ اسلام آباد سٹیشن سے صدر سٹیشن راولپنڈی اور وہاں سے واپس پاک سیکرٹریٹ سٹیشن تک آزمائشی بس چلوا کر اہل راولپنڈی/اسلام آباد کو جہاں خوشگوار حریت کا موقع دیا وہاں صحافیوں کو اس بس سروس کی خوبیوں خامیوں کو ایک نظر دیکھنے کا موقع بھی دیا، صوبائی دارالحکومت لاہور سے سینئر صحافیوں کا بارہ رکنی وفد صبح سویرے ہیلی کاپٹر پر اسلام آباد لے جایا گیا جس کی شام ساڑھے پانچ لاہور ایئرپورٹ پر واپسی ہوئی، راولپنڈی اسلام آباد میٹرو پراجیکٹ مرکزی حکومت اور پنجاب حکومت کی مشترکہ کاوش ہے، جس پر دونوں حکومتوں نے آدھی آدھی رقم لگائی ہے تاہم وفاقی حکومت نے اس کے علاوہ پشاور موڑ انٹرچینج پر3 ارب روپے مزید خرچ کئے ہیں، وفاقی وزیر اطلاعات سینیٹر پرویز رشید نے صحافیوں کے ہمراہ آزمائشی بس میں سفر کیا، میٹرو بس کا ٹریک اور سٹیشن پایہ تکمیل کو پہنچ چکے ہیں اور بقول وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف وزیراعظم میاں نواز شریف اگلے چند دنوں میں اس کا باقاعدہ افتتاح کریں گے، وزیراعلیٰ شہباز شریف پنجاب ہائوس اسلام آباد میں صحافیوں کو بریفنگ دیتے ہوئے بہت خوشگوار موڈ میں تھے، انہوں نے ریکارڈ مدت میں اس منصوبے کی تکمیل پر خوشی کا اظہار کیا تاہم چند صحافیوں نے اپنے سوالات کے ذریعے انہیں دھرنا دینے والوںکے بارے میں زبان کھولنے پرمجبور کردیا، شہباز شریف نے کہا کہ دھرنا دینے والوں نے قوم کے کئی ماہ ضائع کئے، یہ منصوبہ بھی اس سے متاثر ہوا اور تقریباً چھ ماہ تک کام ٹھپ رہا تاہم اور تعمیر کرنے والے کنسٹرکٹرز، ہماری سیاسی وسرکاری ٹیم کی دن رات کاوش کا نتیجہ ہے کہ یہ منصوبہ مکمل ہو چکا ہے۔