بسنت فیسٹیول کا انعقاد پاکستان کے امیج کو بہتر کرے گا:کائٹ فلائنگ ایسوسی ایشنز

لاہور (لیڈی رپورٹر+سٹی رپورٹر) کائٹ فلائنگ ایسوسی ایشن کے صدر خواجہ ندیم نے کہا ہے کہ پنجاب حکو مت کے محکمہ سیاحت نے21فروری سے 5مارچ تک چھانگا مانگا میں بسنت فیسٹیول منانے کا اعلان کر دےا ہے جس سے دنیا بھر میں پاکستان کا امیج بہتر بنانے میں مدد ملے گی ‘وہاں ایسی ڈور کا استعمال کیا جائے گا جس سے انسانی جانوں کو خطرہ لاحق نہیں ہو گا‘ بسنت فیسیٹیول میں شرکت کےلئے مفت بسیں اور ٹرینیں چلائی جائیںگی اور وہاں جانے والی فیملیز کو پتنگ اور ڈور مفت فراہم کی جائے گی۔ ہوم نیٹ پاکستان کی ڈائریکٹر ام لیلیٰ اظہر ‘ خالد ملک ‘ ذوالفقار علی شاہ اور عبد اللہ ملک کے ہمراہ لاہور پر ےس کلب مےں پر ےس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کائٹ فلائنگ ایسوسی ایشن کے صدر خواجہ ندیم نے کہا کہ محفوظ اور محدود طریقے سے چھانگا مانگا میں بسنت منانے سے پتنگ سازی سے منسلک ہزاروں افراد کو روزگار کے مواقع ملیںگے۔
 بسنت لاہور ریوں کا موسمی اورثقافتی تہوار ہے اور اس بسنت تہوار کو زندہ رکھنے میں مدد ملے گی ۔انہوںنے کہاکہ لوگوں کو بسنت فیسیٹیول میں شرکت کےلئے مفت بسیں اور ٹرینیں چلائی جائیںگی اور وہاں جانے والی فیملیز کو پتنگ اور ڈور مفت فراہم کی جائے گی ۔انہوںنے کہاکہ وہاں ایسی ڈور کا استعمال کیا جائے گا جس سے انسانی جانوں کو خطرہ لاحق نہیں ہو گا ۔ان کاکہنا تھاکہ بست پر پابندی سے لاکھوں لوگ بے روزگار ہو گئے تھے جن میں پتنگ بنانے والے ، پیپرانڈسٹریز ، ہوٹل انڈسٹریز ، ٹریول انڈسٹریز ، بانس اور شہتیر تیار کرنے والے ، گم اور گلو بنانے والے ، دھاگہ ٹیپ اور شیشہ سازی کی صنعت اور دیگر شعبے کے لوگ شامل ہیں۔ان کاکہنا تھاکہ اس صنعت سے لاکھوں عورتیں بھی وابستہ ہیں جو لاہور کے مختلف علاقوں موچی دروازہ، گڈی مارکیٹ، دھرم پورہ، تیزاب احاطہ، کاہنہ ، کوٹ لکھپت ، امامیہ کالونی اور شاہدرہ میں کام کرتی ہیں اور ان تمام عورتوں کا کم آمدنی اور غریب گھرانوں سے تعلق ہے جبکہ یہ ملک کی معیشت کا سب سے اہم حصہ بھی ہیں۔21 فروری سے5 مارچ تک چھانگا مانگا بسنت فیسٹیول کیلئے حکومت پتنگ اور ڈور مفت فراہم کرے گی: ہزاروں افراد کو روز گار ملے گا۔