سعد رفیق نے اہلیہ کیلئے ٹکٹ قبول نہ کرکے اچھی مثال قائم کی: سیاسی رہنما

سعد رفیق نے اہلیہ کیلئے ٹکٹ قبول نہ کرکے اچھی مثال قائم کی: سیاسی رہنما

لاہور (خصوصی رپورٹر) مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنما خواجہ سعد رفیق کا اپنی اہلیہ سابق رکن پنجاب اسمبلی کو ٹکٹ کے لئے درخواست نہ دلوانا اور قیادت کا اس کے باوجود محترمہ غزالہ سعد رفیق کو ان کی کارکردگی کی بنیاد پر خواتین کی مخصوص فہرست میں دوسرے نمبر پر رکھے جانے کو قبول نہ کرنے کے فیصلے پر مسلم لیگ ن، مسلم لیگ فنکشنل، پیپلز پارٹی، جماعت اسلامی اور دیگر جماعتوں کے رہنماﺅں نے قابل تقلید عمل قرار دیا ہے۔ مسلم لیگ ن کے چیئرمین راجہ ظفرالحق نے کہا کہ ہاتھ آئی اسمبلی کی نشست کو چھوڑنا بڑی بات ہے۔ خواجہ رفیق کا بیٹا خواجہ سعد رفیق ہی ایسا کام کر سکتا ہے۔ مسلم لیگ فنکشنل کے مرکزی سینئر نائب صدر سلطان محمود خان ایڈووکیٹ نے کہا کہ قول و فعل ایک ہونا بہت بڑی بات ہے۔ خواجہ سعد رفیق ایک خاندان میں کئی کئی ممبران اسمبلی کا مخالف اور اس نے ابتدا اپنے خاندان سے کر کے اپنی اہلیہ کی نشست کی قربانی دی ہے۔ پیپلز پارٹی کے سابق سیکرٹری جنرل جہانگیر بدر نے کہا کہ آج کے دور میں اصولی فیصلے کرنا ہر کسی کا نام نہیں ہے۔ جماعت اسلامی کے لیاقت بلوچ نے بھی خواجہ سعد رفیق کو خراج تحسین پیش کیا کہ اس نے سیاست میں ایک اچھے کام کی ابتدا کی ہے۔