کالا باغ ڈیم کے حق میں مظاہرے‘ تاجروں کی حمایت‘ حکومت عملدرآمد کی پابند ہے: قانونی ماہرین

لاہور (وقائع نگار خصوصی +خصوصی رپورٹر+کامرس رپورٹر) کالا باغ ڈیم کی تعمیر کے حق میں گذشتہ روز عدلیہ پچاﺅ کمیٹی، پی ڈی پی، سول سوسائٹی اور مسلم لیگ ہم خیال نے الگ الگ مظاہرے کئے، ہائیکورٹ بار کے احاطہ میں عدلیہ بچاﺅ کمیٹی، پی ڈی اور سول سوسائٹی کے زیراہتمام مظاہرے میں درجنوں وکلا اور دیگر افراد نے شرکت کی جبکہ مسلم لیگ ہم خیال کے زیر اہتمام ملتان روڈ گرین بلڈنگ کے سامنے مظاہرہ کیا گیا۔ رہنماﺅں نے کہا کہ کالا باغ ڈیم کی تعمیر کے حوالے سے لاہور ہائیکورٹ کا فیصلہ تاریخی ہے۔ قیادت میاں محمد آصف نے کی۔ تاجروں اور کاروباری برادری نے کالا باغ ڈیم پر لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کو سراہتے ہوئے تاریخی فیصلہ قرار دیا ہے اور کہا ہے کہ کالا باغ ڈیم کا قیام ملک کے لئے ناگزیر ہے، اس کی مکمل حمایت کرتے ہیں۔ لاہور چیمبر کے عہدےداروں نے کہا ہے کہ کالا باغ ڈیم کی تعمیر میں تاخیر آئندہ نسلوں کی تباہی کا باعث بنے گی جبکہ قانونی ماہرین نے کہا ہے کہ حکومت لاہور ہائیکورٹ کی طرف سے کالا باغ ڈیم کی تعمیر کے حکم پر عملدرآمد کی پابند ہے تاہم اس پر عملدرآمد راتوں رات عمل نہیں کیا جا سکتا جب تک حکومت اپیل میں اس فیصلے کو کالعدم قرار نہ دلوائے یہ فیصلہ برقرار رہے گا۔ ان خیالات کا اظہار سپریم کورٹ کے سینئر وکیل خواجہ محمود احمد، محمد اظہر صدیق، لاہور بار ایسوسی ایشن کے صدر چودھری ذوالفقار علی نے اپنے ردعمل میں کیا ہے۔ ہائیکورٹ بار کے احاطہ میں مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے عدلیہ بچاﺅ کمیٹی کے رہنما امتیاز قریشی نے کہا کہ کالا باغ ڈیم کی تعمیر کے لئے لاہور ہائیکورٹ کا فیصلہ تاریخی ہے جس کے دوررس نتائج مرتب ہوں گے۔ ڈیم کی تعمیر سے وطن میں خوشحالی آئے گی ا ور بجلی کا بحران حل ہو گا۔ ڈیم کے مخالف ملک دشمن ہیں۔ملتان روڈ پر گرین بلڈنگ کے سامنے مظاہرے میں ملک خورشید احمد اعوان، دلشاد احمد، ملک قیوم اور شاہد سعید سمیت کارکنوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی جنہوں نے ہاتھوں میں بینرز اور پلے کارڈ پکڑ رکھے تھے جن پر کالا باغ ڈیم اور عدلیہ کے حق م یں جبکہ ڈیم کی مخالفت کرنے والوں کے خلاف نعرے درج تھے۔ اس موقع پر میاں محمد آصف نے کہا کہ کالا باغ ڈیم کے مخالفین بھارت کی زبان بول رہے ہیں۔ بجلی کی لوڈ شیڈنگ اور پانی کے مسئلہ کے حل کے لئے کالا باغ ڈیم کی تعمیر ناگزیر ہے۔ لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر فاروق افتخار، سینئر نائب صدر عرفان اقبال شیخ اور نائب صدر میاں ابوذر شاد نے کہا کہ لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے نے بجلی کے بحران سے پریشان لوگوں کے لئے امید کی کرن پیدا کر دی ہے۔ وفاقی حکومت لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے پر عمل درآمد کرے تاکہ نہ صرف وافر اور سستی بجلی پیدا کی جا سکے بلکہ زرعی زمین کو بنجر ہونے سے بھی بچایا جا سکے۔ فیڈریشن آف پاکستا ن چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے ریجنل چیئرمین شیخ عبدالوحید صندل، نائب صدر اظہر مجید شیخ، پیاف کے چیئرمین انجینئر سہیل لاشاری اور لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے سابق صدر میاں انجم نثار، آل پاکستان انجمن تاجران پاکستان کے صدر اشرف بھٹی، صدر مال روڈ ٹریڈرز ایسوسی ایشن نعیم میر نے کہا کہ کالا باغ ڈیم ملک کے توانائی بحران کا بہترین حل ہے۔ ہر سال 35 ملین ایکڑ فٹ پانی بنا استعمال کئے سمندر میں پھینکا جا رہا ہے حالانکہ ملک میں پانی کی سخت قلت ہے۔ انجمن تاجران سینٹری ویئر لاہور کے نائب صدر میاں سلیم نے کہا کہ لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے پر فوری عمل درآمد کرایا جائے۔ کالا باغ ڈیم ملکی ترقی اور معیشت کی بحالی کے حوالے سے انتہائی ناگزیر ہے۔ علاوہ ازیں خواجہ محمود احمد نے ک ہا کہ کالا باغ ڈیم کے بارے میں عدالت کا فیصلہ و اضح ہے۔ فیصلے کے بعد حکومت یہ نہیں کہہ سکتی کہ ہم کالا باغ ڈیم نہیں بنائیں گے۔ محمد اظہر صدیقی ایڈووکیٹ نے کہا کہ عوام کے بنیادی حقوق کا تحفظ عدالت کی آئینی ذمہ داری ہے۔ اس بنا پر فاضل عدالت نے مشترکہ مفادات کونسل کے فیصلے کے مطابق کالا باغ ڈیم بنانے کا حکم دیا ہے۔ چودھری ذوالفقار علی نے کہا کہ عدالتوں کو بنیادی حقوق کی فراہمی سے متعلق فیصلے دینے کا اختیار ہے، عدالتی فیصلے پر تنقید بلاجواز ہے۔