ڈرون حملے بند نہ کرنے پر نیٹو افواج امریکی جنگ سے علیحدہ ہوجائے

 ڈرون حملے بند نہ کرنے پر نیٹو افواج امریکی جنگ سے علیحدہ ہوجائے

کراچی ( اسٹاف رپورٹر ) تحریک استقلال کے مرکزی صدر رحمت خان وردگ نے عالمی بدامنی پرتبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ انسانی حقوق کے عالم چمپئن نیٹو افواج انسانی ہمدردی کے تحت امریکہ سے مطالبہ کرے کہ امریکی فوری طور پر ڈرون حملے بند کرے۔ کیوں کہ ڈرون حملوں سے بے گناہ لوگ مارے جا رہے ہیں۔ اگر نیٹو کے افواج کے مطالبے پر امریکہ ڈرون حملے بند نہیں کرتا تو نیٹو افواج امریکی جنگ سے علیحدگی کا اعلان کرے کیوں کہ اس نام نہاد امریکی جنگ میں بہت سے بے گناہ لوگ مارے جا چکے ہیں اور ہو رہے ہیں۔ اگر نیٹو افواج نے اس امریکی جنگ سے علیحدگی اختیار کی تو انشاء اللہ نہ صرف افغانستان اور پاکستان بلکہ پوری دنیا سے بدامنی ختم ہوجائے گی اور بے گناہ لوگوں کا قتل عام بند ہوجائے گا۔ انہوںنے ملک کے سیاسی صورتحال پر بھی تبصرہ کیا اور کہا کہ موجودہ حکومت کے پانچ ماہ اور ماضی کے حکومت کے پانچ سال کے مقابلے میں موجودہ حکومت نے عوام پر مہنگائی کے ایٹم بم گرائے ہیں۔ میا ں نوازشریف صاحب جب اقتدار میں نہیں تھے تو وہ ہمیشہ کہتے تھے کہ مشرف نے ڈرون حملوں کی اجازت دی ہے۔ لیکن جب ہم اقتدار میں آئیں گے تو ہم قوم سے وعدہ کرتے ہیں کہ ہم ان ڈرون حملوں کو روکیں گے۔ مگر افسوس لگتا  ہے جس طرح کہ ڈرون حملوں کی اجازت نوازشریف نے امریکہ کو دے دی ہے۔ صدر مشرف کے خلاف آرٹیکل 6میںغداری کا مقدمہ حکومت کی ناکامی کا بہت بڑا ثبوت ہے۔