معاشرے میں تبدیلی لانا چاہتے ہیں تو ذہن بدلنا ہونگے: جسٹس افتخار

معاشرے میں تبدیلی لانا چاہتے ہیں تو ذہن بدلنا ہونگے: جسٹس افتخار

کراچی (آن لائن) چیف جسٹس افتخار محمد چودھری  نے کہا ہے  کہ وکلا 21 ویں صدی کے مسائل کو 19 ویں صدی کے آلات سے حل کر رہے ہیں۔اس وقت قانون کو جدید بنانے کی اشد ضرورت ہے۔ آئین اور قانون سے محبت اور اس کی بحالی کا سہرا کالے کوٹ والوں کے سر جاتا ہے، امید ہے وکلا   نئے چیف  جسٹس جسٹس تصدق سے بھرپور تعاون کریں گے اگر ہم معاشرے میں تبدیلی لانا چاہتے ہیں تو ہمیں اپنے ذہن تبدیل کرنے ہوں گے۔ سندھ ہائی کورٹ میں جسٹس افتخار محمد چودھری کے اعزاز میں الوداعی عشائیہ کا انتظام کیا گیا۔ بار رہنمائوں اور سپریم کورٹ کے ججوں نے چیف جسٹس کے اعزاز میں الوداعی کلمات کہے۔ وائس چیئرمین سندھ بار کونسل محمد عاقل نے کہا  چیف جسٹس افتخار محمد چودھری کی خدمات فراموش نہیں کی جا سکتیں۔ جسٹس افتخار محمد چودھری نے اپنے عزم سے ڈکٹیٹر کو جھکنے پر مجبور کیا۔ چیف جسٹس سندھ ہائی کورٹ جسٹس مقبول باقر کا کہنا تھا کہ جسٹس افتخار محمد چودھری نے ملک میں عدلیہ کو عوام تک پہنچایا۔