حامد میر پر حملہ، عدالتی کمشن نے پہلے دن کی تحقیقات مکمل کر لیں

حامد میر پر حملہ، عدالتی کمشن نے پہلے دن کی تحقیقات مکمل کر لیں

کراچی (نیوز ایجنسیاں) سینئر صحافی حامد میر پر حملے کی تحقیقات کے لئے بنائے گئے عدالتی کمشن نے سپریم کورٹ کراچی رجسٹری کے چیمبر میں پہلے دن کی تحقیقات مکمل کر لی ہے۔ سیکرٹری داخلہ سندھ، آئی جی پولیس، ڈی جی رینجرز، جوائنٹ ڈائریکٹر آئی بی، ڈی آئی جی ایسٹ اور ڈی آئی جی سپیشل برانچ بھی موجود تھے۔ تین رکنی عدالتی کمشن کا پہلا اجلاس پیر کو سپریم کورٹ کراچی رجسٹری کے چیمبر میں ہوا۔ ذرائع کے مطابق اس دوران، ڈی جی رینجرز، آئی جی سندھ اور سیکرٹری داخلہ نے حامد میر پر حملے کے حوالے سے اپنی رپورٹ پیش کی اور بیانات قلمبند کرائے۔ آئی جی سندھ اقبال محمود نے کمشن کو جائے وقوعہ، حملے کی تفصیلات اور ابتک کی تحقیقات کے بارے میں آگاہ کیا۔ دوسری جانب وزارت داخلہ نے عدالتی کمشن کو بیانات قلمبند کرانے کے لئے ٹیلی فون نمبرز بھی جاری کئے ہیں۔ وزارت داخلہ کے مطابق معلومات فراہم کرنے والے افراد کے نام خفیہ رکھے جائیں گے۔ بی بی سی کے مطابق کمشن کی کارروائی بند کمرے میں ہوئی۔ اوکاڑہ سے آئی این پی کے مطابق سابق امیر جماعت اسلامی سید منور حسن نے کہا ہے کہ حامد میر کے معاملے پر جوڈیشل کمشن کو کام کرنے دیا جائے‘ حالات کو نارمل کرنے کے لئے سب کو اپنی ذمہ داری ادا کرنی چاہئے‘ کشمکش کی صورت حال کسی کے مفاد میں نہیں‘ آپریشن کسی بھی مسئلے کا حل نہیں ہے فوجی آپریشنز نے ہمیشہ ملک میں مسائل پیدا کئے۔ وہ گذشتہ روز ٹیلی فونک بات چیت کررہے تھے۔ منور حسن نے کہا کہ یوسف رضا گیلانی کے بیٹے کے معاملے پر کسی دوسرے کی لب کشائی سے مزید پیچیدگی پیدا ہو گی۔ممبئی سے اے پی اے کے مطابق بھارت کے سابق وزیرخارجہ یشونت سنہا نے وزیراعظم نوازشریف کوخط لکھا ہے، جس میں کہا گیا ہے کہ صحافی حامد میر کی سکیورٹی کو یقینی بنایا جائے۔ بھارتی اخبار ٹائمز آف انڈیا کے مطابق یشونت سنہا نے وزیراعظم محمد نوازشریف کو لکھے گئے خط میں پاکستان میں صحافیوں اور میڈیا کے اداروں پر حملوں پر تشویش کا اظہارکیا۔یشونت سنہانے درخواست کی کہ ملک کے سچے صحافیوں اور صحافتی اداروں کی حفاظت کی جائے۔