سمندری طوفان ’’نیلوفر‘‘ انتہائی شدید ہو گیا‘ کراچی کا ساحل بند

کراچی (نیٹ نیوز+ اے ایف پی) بحیرہ عرب میں بننے والا طوفان ’’نیلوفر‘‘ جمعہ کی صبح عمان سے ٹکرائے گا جس کے بعد کراچی اور گوادر کی طرف بڑھتے بڑھتے اسکا زور کم پڑ جائے گا تاہم بھارتی محکمہ موسمیات نے سمندری طوفان شدید سے ’’انتہائی شدید‘‘  ہو جانے کا خدشہ ظاہر کرتے ہوئے الرٹ جاری کر دیا ہے جبکہ پاکستان کے ساحلی علاقوں میں بھی چوکسی بڑھا دی گئی۔ کراچی کی انتظامیہ نے گزشتہ رات سے 2روز کیلئے دفعہ 144نافذ کرتے ہوئے ساحل سمندر کو بند کرنے کا حکم دیدیا۔ پولیس کے مطابق ساحل پر کھانے پینے کی دکانیں اور دیگر تفریحی مقامات بند کرانے کے احکامات ملے ہیں۔ محکمہ موسمیات پاکستان کے مطابق دو روز کے دوران گوادر، ٹھٹھہ، کراچی اور دیگر ساحلی علاقوں میں ریڈ الرٹ کر دیا گیا یہاں زبردست بارش کا امکان ہے یہ علاقے کل بدھ سے طوفان کے اثرات کی لپیٹ میں آنا شروع ہو جائیں گے اور موسلادھار بارش ہو سکتی ہے۔  اطلاعات کے مطابق طوفان نیلوفر گوادر کے ساحل کی طرف بڑھ رہا ہے اور گزشتہ شام تک 1120کلو میٹر کے فاصلے پر تھا غالب امکان ہے کہ طوفان عمان کی طرف جائے گا۔ ادھر کراچی کی انتظامیہ نے ریڈ الرٹ جاری کرتے ہوئے بدھ سے جمعہ تک ماہی گیروں اور شہریوں کو ساحل سے دور رہنے کی ہدایت کی ہے۔ اسکے علاوہ سمندر میں موجود ماہی گیروں کو آج ہر صورت واپسی کی ہدایت کر دی گئی۔ موسمیات کے ماہرین کا کہنا ہے کہ طوفان کے زیراثر پاکستان اور بھارت کے ساحلی علاقوں میں 150کلو میٹر فی گھنٹہ تک شدت کی ہوائیں چلیں گی اورآج بدھ سے جمعہ تک شدید بارشیں ہونگی۔ ادھر بھارت کے صوبے گجرات میں سمندری طوفان کے پیش نظر نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ فورس کو الرٹ کر دیا گیا۔ گجرات کے ساحلی علاقوں سوراشٹر اور کچھ سے لوگوں کو محفوظ مقامات پر منتقل کیا جا رہا ہے۔ دریں اثناء ڈی سی او بدین کے مطابق سمندری طوفان کے پیش نظر ضلع میں بچائو کے انتظامات مکمل کر لئے گئے۔ امدادی کیمپ قائم ہیں اور سرکاری ملازمین کی چھٹیاں منسوخ کر دی گئیں۔ سمندری طوفان کے زیراثر سندھ کے صحرائی علاقے تھر میں بھی شدید بارش کا امکان ہے جس سے وہاں خشک سالی دور ہو جائیگی۔