عوام میں ذیابطیس اور انسولین بارے آگاہی کی ضرورت ہے، ماہرین

عوام میں ذیابطیس اور انسولین بارے آگاہی کی ضرورت ہے، ماہرین

کراچی(نمائندہ نوائے وقت)ڈاﺅ یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز کے تحت پاکستان میں پہلی بار رمضان المبارک اور انسانی صحت کے موضوع پر دو روزہ بین الاقوامی سمپوزیم کا آغاز جمعہ 25اکتوبر کو اوجھا کمپس میں پری سپوزیم ورکشاپ سے ہوا جس میں ماہرین نے شرکا کو روزے کے دوران انسولین کے استعمال کے بارے میں بتایا۔ پری سپوزیم ورکشاپ دو سیشن پر مشتمل تھا۔ پہلے سیشن میں قومی ادارہ برائے ذیابیطس اور اینڈوکرائنولوجی، ڈاﺅ یونیورسٹی کے سابق ڈائریکٹر پروفیسر ڈاکٹر زمان شیخ نے شرکا کو روزے کے دوران انسولین کے استعمال اور دنیا بھر میں جدید انسولین کی تحقیقات کے بارے میں بتایا۔ انہوں نے کہاکہ جو افراد بھی ذیابطیس کے مرض میں مبتلاہیں انہیں چاہئے کہ وہ اپنا فوری علاج کرائیں تاکہ انسولین اور ادویات سے علاج کرانے کی ضرورت نہ پڑے۔ خون میں شگر کی بڑھتی ہوئی مقدار کو روکنے کے لیے جسم کو انسولین کی ضرورت ہوتی ہے۔ جو لوگ ذیابطیس کے مرض میں مبتلا ہوتے ہیں ان کا جسم اس ہارمون کی مطلوبہ مقدار پیدا کرنے کی صلاحیت سے محروم ہو جاتا ہے اور اس کے مناسب استعمال پر قادر نہیں رہتا اور اسے انسولین کی ضرورت ہوتی ہے۔