کراچی: پُرتشدد واقعات 3افراد ہلاک، 2مقابلے، 12دہشت گرد مارے گئے

  کراچی: پُرتشدد واقعات 3افراد ہلاک، 2مقابلے، 12دہشت گرد مارے گئے

کراچی (کرائم رپورٹر+ نوائے وقت رپورٹ)کراچی کے مختلف علاقوں میں منگل کو تشدد کے واقعات میں 3افراد ہلاک جبکہ رینجرز سے مقابلوں میں 12دہشت گرد مارے گئے۔ تفصیلات کے مطابق سچل کے علاقے سکندر گوٹھ میں نامعلوم افراد نے گھر میں سوئے ہوئے 50سالہ طارق کو تیز دھار آلے سے گلاکاٹ کر ہلاک کردیا۔ پاک کالونی کے علاقے پرانا گولیمار علی محمد ولیج میں قادری مسجد کے قریب مسلح افراد کی فائرنگ سے ایک شخص رسول بخش ہلاک اور دوسرا عمران زخمی ہوگیا۔ اس کے علاوہ ڈیفنس فیز4 سے ایک شخص کی نعش ملی جسے تشدد کرکے ہلاک کیا گیا تھا پولیس کے مطابق مقتول کی عمر تقریباً 35سال تھی تاہم فوری شناخت نہیں ہوسکی ۔ دریں اثناء نارتھ ناظم آباد میں زیرتعمیر عمارت میں کام کرنے والا مزدور 35سالہ احمد سر پر سریا لگنے سے ہلاک ہوگیا۔ انویسٹی گیشن پولیس ایسٹ نے ٹارگٹ کلنگ اور بھتہ خوری کی وارداتوں میں ملوث ایک ملزم کو گرفتار کرکے دستی بم اور آتشیں اسلحہ برآمد کرلیا پولیس کے مطابق ملزم عبادالحسن زیدی کی گرفتاری گلشن اقبال سے عمل میں آئی ملزم عبادالحسن مسجد کے پیش امام اور مذہبی جماعتوں کے کارکنوں سمیت 27افراد کے قتل اور بھتہ خوری کی وارداتوں میں ملوث ہے۔ اسی طرح کاٹھور کے قریب سپر ہائی وے پر رینجرز کی کارروائی میں فائرنگ کا تبادلہ ہوا جس میں 8 دہشت گرد ہلاک ہو گئے۔ ترجمان رینجرز کے مطابق دہشت گردوں کی گولیاں لگنے سے 2اہلکار زخمی ہوئے۔ علاوہ ازیں منگھو پیر میں رینجرز کے ساتھ مقابلے میں 4 دہشت گرد مارے گئے۔ مرنیوالے دہشت گردوں کا تعلق کالعدم تنظیموں سے بتایا جا رہا ہے۔ فوری شناخت نہیں ظاہر کی گئی تاہم ملزموں کے قبضے سے بھاری اسلحہ اور دیگر سامان برآمد کر لیا گیا۔