معاشرے کے تمام طبقات میں اصلاح کی جدوجہد ضروری ہے‘ منور حسن

معاشرے کے تمام طبقات میں اصلاح کی جدوجہد ضروری ہے‘ منور حسن

کراچی ( اسٹاف رپورٹر ) تحریکِ اسلامی پاکستان کے سالانہ اجتماع کے آخری روز منعقد ہ مذاکرے سے ” پاکستان میں غلبہ اسلام کی کوششوں کا جائزہ“ کے عنوان پر خطاب کرتے ہوئے امیر جماعت اسلامی سید منور حسن نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان مںی غلبہ اسلام کی جدوجہد ایک کثیر الجہت مسئلہ ہے۔ غلبہ اسلام کے لئے ایک مشترکہ دینی مہم کا آغاز ایک خوش کن بات ضرور ہے لیکن کوئی نیا اتحاد اسی صورت میںقابل عمل ہو سکتا ہے جب ماضی کے اتحادوں کے شکست و ریخت کے اسباب متعین کرلئے جائیں۔ انہوں نے کہا کہ جس طرح انسانی جسم میںدل کی حکمرانی ہے جو مختصر عصور ہوتے ہوئے سارے جسم کو چلاتا ہے اور اس کا بگاڑ سارے جسم کا بگاڑ ہے اسی طرح انسانی معاشرے پر حکمراں اقلیت کا معاملہ بھی ہے۔ معاشرے کے تمام طبقات میں اصلاح کی جدوجہد ضروری ہے لیکن خصوصیت کے ساتھ حکمراں اقلیت کی اصلاح بہت ضروری ہے جس پر ہمیں اپنی توجہ مرکوز کرنی چاہئے۔ پاکستان کے ابتدائی حکمرانوں میں سے بعض سے بعض معاملات میں انتہائی قابل رشک کردار کا ظہور ہوا۔ لیکن اب ہمارے حکمراں خیر سے خالی ہوتے جا رہے ہیں۔ معاشرے میںغیر ملکی اثر و نفوذ اس حد تک بڑھ چکا ہے کہ اب یہ صرف حکومتی سطح کا مسئلہ نہیں رہا بلکہ سیاسی و دینی جماعتیں بھی کسی نہ کسی حد تک اس کے اثرات سے محفوظ نہیں رہ سکی ہیں۔ مولانا زاہد الراشدی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ  ہمیں دو سطحوں پارلیمانی قوت اور عوامی قوت دونوں کو مجتمع کرنا ہوگاہ وقتی مسائل کی جگہ اصولی بنیادوں پر عوامی تحریک  وقت کی ضرورت ہے۔ امیر تحریک اسلامی پاکستان حافظ سید زاہد حسین نے کہا کہ 9/11 کے بعد مسلمانوں کے اندر اسلام پریقین و اعتماد کا ایک نیا جدبہ بیدار ہوا۔ امیر تنظیم اسلامی حافظ عاکف سعید نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ قائد اعظم ملک میںخلافت راشدہ کے طرز حکومت کی پیروی چاہتے تھے۔