الطاف حسین کو مبینہ دھمکی : مولانا عبدالعزیز کیخلاف متحدہ کے مظاہرے‘ کراچی میں مقدمہ درج

الطاف حسین کو مبینہ دھمکی : مولانا عبدالعزیز کیخلاف متحدہ کے مظاہرے‘ کراچی میں مقدمہ درج

 کراچی (این این آئی+ نوائے وقت رپورٹ) ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین کو لال مسجد کے خطیب مولانا عبد العزیز کی جانب سے دی جانے والی مبینہ دھمکی کےخلاف کراچی کے عزیزآباد تھانے میں ایم کیو ایم کی جانب سے مقدمہ درج کر لیا گیا۔ اتوار کو ایم کیو ایم رابطہ کمیٹی کے رکن عارف خان کی مدعیت میں یہ ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔ ایف آئی آر نمبر 304/14 میں دہشتگردی کی دفعہ 780A، اشتعال انگیزی، سائبر کرائم سمیت دیگر دفعات شامل کی گئیں۔ رپورٹ میں بتایا گیا لال مسجد کے خطیب نے مبینہ طور پر اپنے خطاب میں متحدہ قومی موومنٹ کے سربراہ کو دھمکیاں دی تھیں جس پر رابطہ کمیٹی نے مقدمہ درج کرانے کا فیصلہ کیا۔ اس موقع پر ایم کیو ایم رابطہ کمیٹی پاکستان کے انچارج قمر منصور، ارکان قومی اسمبلی و سینٹ اور دیگر رہنما اور کارکن بھی موجود تھے۔ نوائے وقت رپورٹ کے مطابق ایم کیو ایم نے مولانا عبدالعزیز کی قائد تحریک الطاف حسین کو مبینہ دھمکی کے خلاف ملک بھر میں مظاہرے کئے۔ متحدہ رہنماﺅں نے کہا کہ جب کسی نے حق کی بات کی تو اسے دھمکیوں کا سامنا کرنا پڑا۔ مطالبہ کرتے ہیں تمام دہشت گردوں کو سزا دی جائے۔ کراچی میں ایم کیو ایم نے پریس کلب کے باہر احتجاج کیا جس میں قرارداد پیش کی گئی کہ آپریشن ضرب عضب کا دائرہ کار ملک بھر میں پھیلایا جائے۔ مولانا عبدالعزیز کے خلاف آرٹیکل 6کے تحت مقدمہ درج کرکے فوری گرفتار کیا جائے۔ ایم کیو ایم نے حیدر آباد، سکھر، لاڑکانہ اور پشاور میں بھی ایم کیو ایم نے پریس کلب کے باہر مظاہرہ کیا اور مولانا عبدالعزیز کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا مطالبہ کیا۔ این این آئی کے مطابق متحدہ قومی موومنٹ کے قائد الطا ف حسین نے ایک بیان میں اپنے خلاف لال مسجد کے خطیب مولاناعبدالعزیزکے 20 دسمبر2014ءکو جاری کئے جانےوالے ایک دھمکی آمیز وڈیو پیغام کو انتہائی جھوٹا، شرمناک اور قابل مذمت قرار دیا ہے۔ الطاف حسین نے کہا میں نے 19دسمبر کو قومی یکجہتی ریلی سے اپنے خطاب میں حکومت سے مسجد ضرار کی طرح لال مسجد کو ڈھانے اور جامعہ حفصہ کو بند کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔ میرے اس مطالبہ کے جواب میں لال مسجد کے خطیب مولانا عبدالعزیز نے ہفتہ کی شب جو وڈیو پیغام جاری کیا وہ دھمکی آمیز ہی نہیں بلکہ اس وڈیو پیغام میں مولانا عبدالعزیز نے ایک بار پھر مکروفریب اور جھوٹ سے کام لیتے ہوئے جو ناشائستہ زبان استعمال کی وہ انتہائی غیرمناسب، شرمناک اور قابل مذمت ہے۔ انہوں نے کہا میں تمام علمائے کرام، مشائخ عظام، تاریخ دانوں، تجزیہ نگاروں، سیاسی ومذہبی جماعتوں، صحافیوں، اساتذہ کرام اور اینکر پرسنز سے سوال کرتا ہوں آپ اپنے ضمیر کے مطابق بتائیںمیں اپنے بیان میں کہاں تک درست یا غلط ہوں؟۔لاہور سے خصوصی رپورٹر کے مطابق ایم کیو ایم نے طالبان اور مولانا عبدالعزیز کے خلاف لاہور پریس کلب کے باہر احتجاجی مظاہرہ کیا اور مولانا عبدالعزیز اور طالبان کے خلاف شدید نعرے بازی کی گئی۔ مظاہرے میں ایم کیو ایم سنٹرل ایگزیکٹو کونسل کی رکن بسمہ آصف سکھیرا، نائب صدور سنٹرل پنجاب ہاشم رضا، کریم خان ثاقب، سیکرٹری جنرل رانا اشرف ایڈووکیٹ اور لاہور کے صدر سید ارتضیٰ حسین کاظمی سمیت دیگر عہدیداران و کارکنان نے شرکت کی۔
متحدہ/ مظاہرے