گورنر سندھ نے ایم کیو ایم کے وزراءکے استعفے منظور نہ کئے، گرین سگنل کا انتظار

 گورنر سندھ نے ایم کیو ایم کے وزراءکے استعفے منظور نہ کئے، گرین سگنل کا انتظار

 کراچی (وقائع نگار) متحدہ قومی موومنٹ کی جانب سے وفاقی و سندھ حکومت سے علیحدگی کے باوجود گورنر سندھ ڈاکٹر عشرت العباد خان نے اب تک ایم کیوایم کے صوبائی وزراکے استعفے منظور نہیں کئے۔ سیاسی حلقوں کا کہنا ہے کہ ایم کیوایم واضح طور پراعلان کر چکی ہے کہ اب وہ حکومت میں دوبارہ شامل نہیں ہوگی، گورنر سندھ کی جانب سے استعفی منظور نہ کرنے کی وجہ سے مختلف قیان آرائیاں کی جا رہی ہیں کہ حکومت اور ایم کیو ایم میں بیک ڈور چینل سے مذاکرات ہو رہے ہیں، گورنر سندھ ان مذاکرات میں اہم کردار ادا کر رہے ہیں اور پیپلز پارٹی اور متحدہ میں گورنر کو تبدیل نہ کرنے پر خاموش معاہدہ ہوگیا ہے۔ اہم ترین حکومتی ذرائع کا کہنا ہے کہ گورنر سندھ کو فی الحال تبدیل نہیں کیا جارہا۔ انہیں ایم کیو ایم کے صوبائی وزرا کے استعفیٰ منظورکرنے سے روک دیاگیا ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ حکومتی قیادت نے ایم کیوایم کو منانے کیلئے مسلم لیگ ق کے صدر چوہدری شجاعت سے درخواست کی ہے اور وہ ایم کیوایم کے اعلیٰ قیادت سے رابطے کر کے معاملے کوحل کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ حکومتی ذرائع کا کہنا ہے کہ جب تک اعلی حکومتی شخصیات گرین سگنل نہیں دیں گی، ایم کیوایم کے وفاقی وصوبائی وزرا کے استعفے منظور نہیں ہوں گے۔ دریں اثناءاپنے چیمبر میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے سپیکر سندھ اسمبلی نثار احمد کھوڑو نے کہا کہ متحدہ کے وزراءکے استعفیٰ کی منظوری اور نوٹی فکیشن کے اجراءنہ ہونے تک انہیں اپوزیشن کی نشستیں الاٹ نہیں کی جا سکتیں۔ اگر ایم کیو ایم کے اراکین اپوزیشن نشستوں پر بیٹھنا چاہتے ہیں تو الگ الگ درخواستیں دیں تو انہیں نشستیں الاٹ کردی جائیں گی۔ نثار احمد کھوڑو نے کہا کہ ایم کیو ایم کے 51ممبران کے دستخط سے انہیں درخواست موصول ہوئی ہے جن میں کئی وزراءکے دستخط بھی شامل ہیں جس کی وجہ سے انہیں اپوزیشن کی نشستیں الاٹ نہیں کی گئیں۔