کراچی میں فائرنگ ‘ دستی بم حملے‘ سیاسی کارکن سمیت 6 افراد ہلاک

کراچی میں فائرنگ ‘ دستی بم حملے‘ سیاسی کارکن سمیت 6 افراد ہلاک

کراچی(کرائم رپورٹر) کراچی میں تشدد اور فائرنگ لاشیں ملنے کا سلسلہ بھی جاری رہا۔ پیپلز پارٹی کے کارکن سمیت 6 افراد کو ہلاک دو افراد کو زخمی کردیا گیا۔ پیپلز پارٹی کے کارکن20 سالہ محمد بلال بلوچ ولد عبد المجید کی بوری بند لاش بدھ کی صبح پرانی سبزی منڈی کے علاقے میں عسکری پارک کے نزدیک سے ملی مقتول محمد بلال کے ہاتھ پاﺅں بندھے ہوئے تھے اور اسے بدترین تشدد کا نشانہ بنانے کے بعد گلا گھونٹ کر ہلاک کیا گیا تھا مقتول محمد بلال پی آئی بی کی کچی آبادی منوں گوٹھ میں رہتا تھا اور دو روز قبل پیر کی شپ تقریباً نو بجے گھر سے نکلنے کے بعد لاپتہ ہوگیا تھا پولیس کا کہنا ہے کہ مقتول بلال کو نامعلوم افراد نے اغوا کے بعد تشدد کرکے ہلاک کیا ہے۔ اس کے علاوہ اورنگی ٹاﺅن کے سیکٹر گیارہ میں چاندنی چوک پر مسلح افراد نے ایک شخص 31 سالہ محمد عامر ولد فضل امیر کو فائرنگ کرکے ہلاک کردیا اور فرار ہوگئے۔ فائرنگ کا یہ واقعہ بدھ کی شام پیش آیا جس کے کے بعد علاقے میں کشیدگی پھیل گئی اور دکانیں وغیرہ بند ہوگئیں۔ ادھر میمن گوٹھ کے علاقے جام گوٹھ میں نامعلوم افراد نے ایک نوجوان کو اغوا کے بعد فائرنگ کرکے ہلاک کردیا۔ اور اس کی ہاتھ پاﺅں بندھی لاش جام گوٹھ سے کھوکھرا پار کی طرف جانے والے راستے پر بنے ہوئے پل کے نیچے پھینک کر فرار ہوگئے۔ پولیس کے مطابق مقتول کی عمر تقریباً 28 سال تھی۔ دریں اثناءنارتھ کراچی میں نامعلوم افراد نے ایک شخص35 سالہ محمد عظیم ولد محمد سلیم کو فائرنگ کرکے زخمی کردیا جبکہ نیو کراچی میں پانچ رزوز قبل اغوا کئے جانے والے دکاندار شہزاد علی کو زخمی حالت میں نالے میں پھینک دیا گیا۔ملزمان نے شہزاد علی پر بری طرح تشدد کیا تھا ور اسے مردہ سمجھ کر نالے میں پھینکا تھا لیکن جب لوگوں نے اسے دیکھا تو اس کی سانسیں چل رہی تھیں جس پر اسے فوری طور پر اسپتال پہنچایا گیا اور طبی امداد دی گئی ۔ پولیس کا کہنا ہے کہ دکاندار شہزاد علی کو رقم کے تنازعہ پر اغوا کرکے تشدد کا نشانہ بنایا گیا تھا اور اس سلسلے میں تین افراد کو حراست میں لے کر تفتیش شروع کردی گئی ہے۔ کلری کے علاقے میں ماری پور روڈ پر کراﺅن سینما کے نزدیک ایک شخص کی بوری بند لاش برآمد ہوئی جسے تشدد اور فائرنگ کر کے ہلاک کیا گیا تھا ۔ پولیس کے مطابق مقتول کی عمر تقریباً 35سال تھی۔ تاہم فوری طور پر مقتول کی شناخت نہیں ہو سکی ہے اور لاش کو پوسٹمارٹم کے لئے سول اسپتال پہنچانے کے بعد تفتیش شروع کردی گئی ہے۔ ادھر اورنگی ٹاﺅن کے سیکٹر 13میں مسلح افراد نے فائرنگ کر کے ایک شخص کو 33 سالہ عمران ولد اسلام الدین کو ہلاک کردیا جبکہ خواجہ اجمیر نگری کے علاقے نارتھ کراچی میں روٹ نمبر فور جے کی بسوں کے اسٹاپ کے نزدیک دستی بم کے دھماکے میں چار افراد زخمی ہوگئے۔ دستی بم موٹر سائیکل سوار نامعلوم افراد نے پھینکا تھا جس کے دھماکے سے علاقے میں شدید خوف و ہراس پھیل گیا۔ اس کے علاوہ گلشن اقبال میں ابوالحسن اصفہانی روڈ پر مسلح افراد کی فائرنگ سے بھی ایک شخص زخمی ہوگیا۔ علاوہ ازیں کلری کے علاقے میں علی ہوٹل کے نزدیک ایک مسلح افراد کی فائرنگ سے ایک پولیس ا ہلکار 28 سالہ کبیر احمد ولد دین محمد زخمی ہوگیا جبکہ نیو کراچی کے سیکٹر فائیو ای میں فائرنگ کر کے ایک نوجوان 25 سالہ نبیل احمد ولد ایوب کو زخمی کردیاگیا۔ کراچی کی ساحلی تفریح گاہ پیراڈائز پوائنٹ سے سمندر میں ڈوبی ہوئی ایک لاش ملی پولیس کے مطابق متوفی کی عمر تقریباً 30سال تھی تاہم لاش آٹھ دس دن پرانی ہونے کی وجہ سے انتہائی مسخ ہو چکی تھی۔ سولجر بازار تھارو لین میںفائرنگ سے ایک شخص نبیل ہلاک ہوگیا۔ نیو کراچی کے سیکٹر فائیو اے ٹو میں موٹرسائیکل سوار ایم کیو ایم کے یونٹ آصف پردستی بم پھینک کر فرار ہوگئے۔ دھماکے سے 2افراد زخمی ہوگئے ۔ کھارادر میںدو گروپوں میںفائرنگ سے دکانیں اور بازار بند ہوگئے۔