’’این اے 246 کا ضمنی الیکشن‘‘ ضلع وسطی کراچی میں آج سے ڈبل سواری پر پابندی

’’این اے 246 کا ضمنی الیکشن‘‘ ضلع وسطی کراچی میں آج سے ڈبل سواری پر پابندی

کراچی (نوائے وقت رپورٹ) کراچی کے حلقہ این اے 246 میں 23 اپریل کو ضمنی الیکشن کے حوالے سے سیاسی سرگرمیاں عروج پر پہنچ گئیں۔ الیکشن کمشن نے حلقہ کے 213 پولنگ سٹیشنوں میں سی سی ٹی وی کیمرے لگانے کی ہدایت کردی۔ اسکے علاوہ پریزائیڈنگ افسروں کو پولنگ سے 24 گھنٹے قبل اپنے متعلقہ پولنگ سٹیشنوں میں پہنچنے کو کہا گیا ہے۔ الیکشن کمشن نے انتخابی امیدواروں کیلئے الیکشن سرگرمیاں جاری رکھنے کا وقت 24 گھنٹے بڑھا دیا، انتخابی مہم آج رات 12 بجے ختم کردی جائیگی۔ حلقہ میں دفعہ 144 نافذ کرنے کا بھی فیصلہ کیا گیا ہے جس کے تحت 5 سے زائد افراد پولنگ سٹیشن کے اندر نہیں جاسکیں گے۔ کمشن نے انتخابات کو مانیٹر کرنے کیلئے کنٹرول روم قائم کردیا جبکہ معاملات کی نگرانی کیلئے ایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل مسعود ملک کی نگرانی میں 2 ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں۔ علاوہ ازیں حلقہ کیلئے فوج کی زیر نگرانی 4 لاکھ بیلٹ پیپروں کی چھپائی کا کام مکمل کرلیا گیا۔ بیلٹ پیپر کل پریزائیڈنگ افسروں کے حوالے کئے جائیں گے۔ دریں اثناء حلقہ سے مزید دو آزاد امیدوار پرویز علی اور حسن پرویز دستبردار ہوگئے۔ اس طرح مدمقابل امیدواروں کی تعداد 12 رہ گئی۔ محکمہ داخلہ سندھ نے پولیس کی سفارش پر سکیورٹی خدشات کے پیش نظر حلقہ کے علاقے ضلع وسطی میں آج سے 24 اپریل تک ڈبل سواری پر پابندی لگانے کا فیصلہ کیا ہے۔ دوسری طرف تحریک انصاف کے امیدوار عمران اسماعیل کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے جے یو پی کے مرکزی سیکرٹری جنرل شاہ اویس نورانی نے ضمنی الیکشن کیلئے تحریک انصاف کی حمایت کا اعلان کردیا۔ انہوں نے کہا کہ جب تک عشرت العباد گورنر سندھ ہیں کراچی میں امن نہیں ہوسکتا۔ ادھر پاکستان شیعہ کونسل نے ایم کیو ایم کے امیدوار کنور نوید جمیل کی حمایت کردی۔ کونسل کے رہنما زوہیر عابدی نے کہا متحدہ نے دہشت گردوں کیخلاف جہاد کیا اور خونریزی کو شہر میں ختم کرایا۔ علاوہ ازیں متحدہ کے قائد الطاف حسین نے رابطہ کمیٹی کو ہدایت کی ہے کہ ووٹروں کو بآسانی پولنگ سٹیشنوں تک پہنچانے کیلئے ٹرانسپورٹ اور معذورووٹروں کیلئے وہیل چیئرز فراہم کرنے کی ہدایت کردی۔