کراچی : ٹارگٹ کلنگ جاری‘ 3 گھٹنے میں امن کمیٹی کے 2 کارکنوں سمیت 13 جاں بحق‘ 40 زخمی

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک + نمائندہ نوائے وقت) کراچی مےں 3گھنٹوں کی فائرنگ کے واقعات مےں امن کمیٹی کے 2کارکنوں سمیت 13افراد جاںبحق جبکہ 40سے زائد زخمی ہوگئے، مارکیٹیں اور بازار بند ہوگئے، خوف و ہراس پھیل گیا، صرف اورنگی اور بلدیہ ٹاﺅن مےں فائرنگ سے 7افراد ہلاک ہوئے۔ مختلف علاقوں مےں وقفے وقفے سے فائرنگ ہو رہی ہے، وزیر داخلہ نے ڈی جی رینجرز کو فون کرکے صورتحال کنٹرول کرنے کی ہدایت کی ہے۔ اورنگی سے 3افراد کو فائرنگ کرتے ہوئے گرفتار کیا گیا ہے، ڈی پی او کا کہنا ہے کہ یہ ٹارگٹ کلنگ نہیں بلکہ شرپسند ہےں جو کراچی کا امن برباد کر رہے ہےں۔ منگھو پیر روڈ پر نامعلوم ملزمان کی فائرنگ سے 30 سالہ ابو طالب، اورنگی ٹاﺅن بکرا پیڑی کے قریب فائرنگ سے ظفر ولد اقبال، بلدیہ ٹاﺅن مےں فائرنگ سے 22سالہ وقاص جاںبحق ہوگئے۔ زمان ٹاﺅن کے علاقے کورنگی نمبر ایک کے قبرستان سے 35سالہ محمد عرفان ولد عظیم کی لاش ملی ہے۔ ناظم آباد کی خاموش کالونی میں فائرنگ سے سلیم بادشاہ، نادرن بائی پاس پر نامعلوم ملزمان کی فائرنگ سے ٹرک کا کلینر 22سالہ بخت علی مارا گیا جبکہ ڈرائیور حضور بخش ولد خدا بخش زخمی ہوگیا گارڈن کے علاقے رامسوامی میں فائرنگ سے ذیشان اور محمد سنی زخمی ہوگئے قصبہ موڑ پر فائرنگ سے 35سالہ صنوبر اور 20سالہ عبداللہ زخمی ہوگئے۔کراچی کے علاقے گارڈن میں واقع دھوبی گھاٹ نیازی محلہ میں نامعلوم ملزمان کی فائرنگ سے 3افراد ہلاک ہوگئے۔ اورنگی سیکٹر 13میں نامعلوم افراد کی فائرنگ سے ایک شخص ہلاک ہوگیا۔ مسکن چورنگی، اور کٹی پہاڑی پر نامعلوم افراد کی فائرنگ سے 2افراد جاںبحق ہوگئے۔