ہولناک واقعہ سے انسانیت لرز گئی دہشتگردی کی نئی لہر میں کئی پیغامات پوشیدہ ہیں: سیاسی و مزہبی رہنما

کراچی(اسٹاف رپورٹر)سہون شریف میں خوفناک بم دھماکے کی مذمت کرتے ہوئے سیاسی‘ سماجی اور مذہبی رہنمائوں نے اپنے شدید ردعمل کا اظہار کیاہے۔ پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان‘ پی پی رہنما سینیٹر شیری رحمان‘ ایم کیو ایم رابطہ کمیٹی‘ پاک سرزمین پارٹی کے صدر انیس قائم خانی‘ مصطفی کمال نے کہا ہے کہ دہشت گردی کی نئی لہر میں پوشیدہ پیغام کو سمجھنے کی ضرورت ہے۔ تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے قیمتی جانوں کے ضیاع پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے اپنے مذمتی بیان میں کہا ہے کہ معصوموں کے قتل میں ہر قسم کی انسانی و اخلاقی حدود پامال کی جارہی ہیں دہشت گردی کی نئی لہر میں بہت سے پیغامات پوشیدہ ہیں۔ پیپلز پارٹی کی نائب صدرسینیٹر شیری رحمان ‘پیپلز پارٹی سندھ کے جنرل سیکریٹری وقار مہدی کی لعل شہباز قلندر پر دہشت گردی کی بھرپور مذمت کرتے ہوئے کہا کہ دہشت گردی کے پے در پے ہونے والے واقعات سے نیشنل ایکشن پلان کٹھائی میں پڑتا نظر آرہا ہے۔درگاہ سہون شریف میںخوفناک بم دھماکے کے نتیجے میںمتعددزائرین کے جاںبحق وزخمی ہونے کے افسوسناک واقعے پرمتحدہ قومی موومنٹ (پاکستان)نے پکاقلعہ گرائونڈحیدرآبادمیںہونے والامیوزیکل نائٹ پروگرام منسوخ کردیاگیاہے ۔ترجمان ایم کیوایم (پاکستان) نے اعلان کہاکہ جمعہ کو شام 4بجے پکاقلعہ گرائونڈحیدرآبادمیںعظیم الشان’’متحدہ یکجہتی جلسہ ‘‘شیڈول کے مطابق منعقدکیاجائے گا۔ ایم کیوایم( پاکستان)کی رابطہ کمیٹی نے درگاہ سہون شریف میںبم دھماکے کی شدیدالفاظ میںمذمت کرتے ہوئے دھماکے کے نتیجے میں جاںبحق افرادکے سوگوارلواحقین سے دلی تعزیت وہمدردی کرتے ہوئے کہاکہ ایم کیوایم ان کے غم میںبرابرکی شریک ہیں۔رابطہ کمیٹی نے دعاکی اللہ تعالیٰ درگاہ سہون شریف میںجاںبحق ہونے والے تمام افرادکواپنی جواررحمت میںاعلیٰ مقام عطافرمائے۔دریں اثناء متحدہ قومی موومنٹ (پاکستان)کی رابطہ کمیٹی نے ایم کیوایم کے کارکنان اورحق پرست عوام سے اپیل کی ہے کہ وہ درگاہ سہون شریف میںخوفناک بم دھماکے کے نتیجے میںزخمی ہونے والے زائرین کے لئے زیادہ سے زیادہ خون کے عطیات جمع کروائیں۔پاک سرزمین پارٹی کے صدر انیس قائم خانی کی درگاہ لال شہباز قلندر مزار کے اندر دھماکہ کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے اور دھماکے نتیجے میں متعدد زائرین کی شہادت اور زخمی ہونے پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔ اپنے بیان میں انہوں نے کہا ہے کہ ملک دشمن عناصرمقدس مقامات پر دھماکے کر کے ملک میں عدم استحکام اور انتشارپیدا کر کے اپنے مز موم مقاصد کی تکمیل چاہتے ہیں، انسانی جا نوں سے کھیلنے والے درندوں کو انسان کہنا انسا نیت کی توہین ہے اور ایسے عنا صر کا کوئی مذہب نہیں ہوتا۔ انیس قائم خانی نے شہید ہونے والوں کیلئے دعائے مغفرت اور زخمی ہونے والوں کی جلد صحتیابی کیلئے دعا کی۔ مہاجر قومی موومنٹ ( پاکستان ) کے چیئرمین آفاق احمد نے لعل شہباز قلند ر کے مزار کے احاطے میں ہونے والے دھماکے کہ شدید الفاظ میں مذمت اور قیمتی جانی نقصان پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے۔اپنے مذمتی بیان میں آفاق احمد نے کہا کہ یکے بعد دیگرے پہلے لاہور پھر پشاور اور اب سہون شریف میں دھماکہ نے ثابت کردیا کہ دہشت گردوں کو نئی کمک مل چکی ہے ۔آفاق احمد نے کہا کہ بحالی امن کے حوالے سے حکومتی دعوے سن سن کر کان پک گئے جبکہ حقیقت یہ ہے کہ سڑک ہو یا بازار یا پھر کوئی مذہبی اجتماع یا مقام ،پاکستانی عوام کہیں بھی محفوظ نہیں ۔ آفاق احمد نے کہا کہ قانون نافذ کرنے والے اداروں کی صلاحیتوں پر شک نہیں لیکن دہشت گردی کے مسلسل واقعات سے ایسا محسوس ہوتا ہے کہ کہیں سقم موجود ہے متاثرین کے نام اپنے پیغام میں آفاق احمد نے کہا کہ دکھ کی اس گھڑی میں پوری قوم انکے ساتھ ہے ۔عوامی نیشنل پارٹی کے مرکز ی اسفند یار ولی خان اور صوبائی صدر سینیٹر شاہی سید نے سہون شریف میں حضرت لال شہباز قلندر کی درگاہ پر ہونے والے خود کش حملے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ علم وعظمت کی عظیم مینار کے مزار پرزائرین کو خون میں نہلانے والا انتہائی ہولناک واقعہ سے پوری انسانیت لرز گئی ہے سندھ کی تاریخ کا دردناک ترین سانحہ ہے انسانیت کے دشمنوں نے پیار و اخوت کے سمندر کو خون میں نہلادیا ہے مذمت کے بجائے مزاحمت کا وقت ہے روایتی بیانات اور اقدامات کے بجائے ٹھوس اقدامات کا وقت ہے نیشنل ایکشن پلان جیسے متفقہ لائحہ عمل پر فی الفور عمل کیا جائے ،باچا خان مرکز سے جاری کردہ مشترکہ مذمتی بیان میں مذید کہا ہے کہ پوائنٹ اسکورنگ کے بجائے قوم نتائج کی منتظر ہے کسی سانحے کے رونماء ہونے سے قبل قومی ایکشن پلان پر من و عن عمل کیا جائے۔عوامی نیشنل پارٹی سندھ نے سانحہ سہون کے خلاف تین روزہ سوگ کا اعلان بھی کیا ہے ۔ اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج خان درانی نے درگاہ لال شہباز قلندر کے احاطے میں ہونے والے بم دھماکے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔ اسپیکر سندھ اسمبلی نے بم دھماکے کے نتیجے میں ہلاک ہونے والوںکے اہل خانہ سے تعزیت کی اور زخمیوں کو فوری طبی امداد دینے کی ہدایت کی ہے۔ سربراہ سنی تحریک علامہ بلال سلیم قادری نے کہا کہ سیہون شریف لعل شہباز قلندر کے مزار پر ہونے والے دھماکے کی بھر پور مذمت کرتے ہیں۔حکومت وقت فوری طور پر تمام مزارات کہ فول پروف سیکیورٹی فراہم کرے۔ دہشت گردی کی تازہ لہر آپریشن ضرب عضب اور نیشنل ایکشن پلان پر سوالیہ نشان پیدا کرنے کی کوشش ہے۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ رینجرز کراچی کی طرح پورے ملک میں آپریشن شروع کرے۔ جمعیت علماء پاکستان و ملی یکجہتی کونسل کے صدر ڈاکٹر صاحبزادہ ابوالخیر محمد زبیر نے سہون شریف میں حضرت شیخ عثمان مروندی لعل شہباز قلندر رحمۃ اللہ علیہ کے مزار کے اندر خود کش دھماکہ کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ مذکورہ واقع میں سینکڑوں افراد شہید اور زخمی ہوئے ہیں جس سے دل خون کے آنسوں رورہا ہے ملک دشمن طاغوتی قوتیں اپنے مذموم عزائم کی تکمیل کیلئے معصوم بے گناہ عوام کو نشانہ بنا کر بزدلانہ کاروائیاں کررہے ہیں۔صاحبزادہ زبیر نے لعل شہباز قلندر رحمۃ اللہ علیہ مزار اقدس پر ناقص سیکورٹی انتظامات پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ 4دن سے پورا ملک دھشت گردوں کے نشانہ پر ہے مگر افسوس دھشت گردی کے پے درپے واقعات کے باوجود درگاہ پر کوئی خاص سیکورٹی کے انتظامات نہیں کئے گئے ۔ انہوں نے کہا کہ آپریشن ضرب عضب اور نیشنل ایکشن پلانے چلانے والی مقتدر قوتوں کواز سر نو دھشت گردی کیخلاف لائحہ عمل ترتیب دینا ہوگا۔سربراہ پاکستان سنی تحریک محمد ثروت اعجاز قادری نے حضرت لعل شہباز قلندر کے مزار پر خود کش حملے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ دہشتگرد مزارات اولیاء پر دہشتگردی کرکے ملک میں فرقہ وارانہ فسادات کرانا چاہتے ہیں ،دہشتگرد امن وسلامتی کے محوراور روحانیت کے مینار پر دہشتگردی کرکے امن محبت بھائی چارگی کے فروغ کے فلسفے کو ختم نہیں کرسکتے ،مزار لعل شہباز قلندر پر خود کش حملہ کھلی دہشتگردی ہے ،دہشتگردوں سے انہی کی زبان میں نمٹنا ہوگا ،پوری قوم کے دل افسردہ ہیں۔ دہشتگردخود کش بمبار کا مزار کے احاطے میں داخل ہوجانا پولیس سیکیورٹی پر سوالیہ نشان ہے ۔ مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکریٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری، علامہ حسن ظفر، علامہ احمد اقبال، علامہ مختار امامی، علامہ مقصود علی ڈومکی، یعقوب حسینی نے سہیون شریف میں حضرت لعل شہباز قلندر کی مزار پر خودکش دھماکے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ دہشتگردوں نے پاکستانی عوام پر جنگ مسلط کرنے کا اعلان کر دیا ہے، انہوں نے سانحہ سہون کے خلاف کل ملک گیر یوم سوگ اور سندھ بھر میں پُرامن ہڑتال کا اعلان کیا ہے۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ ملک بھر میں کالعدم مذہبی جماعتوں کے خلاف فوری آپریشن کیا جائے، رکاوٹ بننے والے عناصر کے خلاف بھی کاروائی کی جائے۔ لعل شہباز قلندر ؒ مزار پر دھماکہ کرنے والے اسلام کے دشمن و خوارج ہیں ۔لعل شہباز قلندر مزار سمیت متعدد دھماکے بھارتی سازشوں کو حصہ ہیں ۔حکومت اور محب وطن قوتیں مل کر گستاخان رسول ؐاور اولیا ء اللہ کے دشمنوں کے خلاف متحد ہو کر افواج پاکستان کا ساتھ دیں ۔مذمت کرنے والوں میں متحدہ علماء محاذ کے بانی سیکریٹری جنرل مولانا محمد امین انصاری ، سرپرست علامہ مرزا یوسف حسین، چیئرمین علامہ عبدالخالق فریدی،صدر مولانا انتظار الحق تھانوی ،علامہ علی کرار نقوی ،مفتی محمد بخاری ،ڈاکٹر جمیل بندھانی ،علامہ شاہدین اشرفی ،علامہ عبداللہ غازی ،مطلوب اعوان ، سید رضی حیدر رضوی ،میڈیا کوارڈینیٹر فہدعلی،مقصود عالم ہمایوں ،حافظ سید عاصم بخاری و دیگر شامل ہیں ۔اقوام متحدہ میں پاکستان کے سابق مندوب عبداللہ حسین ہارون نے لعل شہباز قلندر ؒدرگاہ سہیون شریف میںخودکش بم دھماکے کے نتیجے میں متعدد زائرین کے جاں بحق اور زخمی ہونے پر واقعے کی شدید مذمت کی ہے۔سندھ حکومت واقعے کی تحقیقات کر کے ذمہ داران کو کیفر کردار تک پہنچائے۔عبداللہ حسین ہارون کا لعل شہباز قلندر ؒ درگاہ سہیون شریف میں خودکش بم دھماکے کے واقعے میں انسانی جان کے ضیاع پر مذمت کرتے ہوئے کہنا تھا کہ عوام کو تخریب کاروں کے رحم و کرم پر چھوڑنے سے واضح ہوگیا کہ حکومت تحفظ کرنے میں ناکام ہوگئی ہے۔انہوں نے واقعہ میں جاں بحق ہونے والے زائرین کے لواحقین سے تعزیت کا اظہار کیا ہے اور زخمیوں کی جلد صحتیابی کیلئے دعا کی ہے۔ جماعت اہلسنت پاکستان کے مرکزی امیر پروفیسر سید مظہر سعید کاظمی ، مرکزی ناظم اعلیٰ سید ریاض حسین شاہ ، کرا چی کے امیر علامہ سید شاہ عبدالحق قادری کے نظام مصطفی پارٹی کے سربراہ سابق وفاقی وزیرڈاکٹر حاجی محمد حنیف طیب، عثمان خان نوری ، الحاج محمد رفیع ، شبیر احمد قاضی، و دیگر رہنمائوں نے کہا کہ مستقل دھماکوں کا سلسلہ ملک کے لئے کسی خطرہ سے کم نہیں ، دہشت گردوں کو بے نقاب کرنا ہوگا اور مستقل بنیادوں پر اسکا حل کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے ۔رہنمائوں نے کہا کہ فوجی عدالتیں فوراً کام شروع کریں اور جو فیصلے اب تک فوجی و و دسری عدالتوں میں ہوئے اور ان میں دہشت گردوں کیلئے جو سزائیں تجویز ہوئیں یا جو سزائے موت سنائی جاچکیں ہیں ان پر بھی فوری عملدرآمد کرنا ہوگا ۔ جماعت اسلامی سندھ کے امیر ڈاکٹر معراج الہدیٰ صدیقی نے اسے انسانیت سے عاری دہشت گردی اور ملک دشمن عناصر کی کارروائی قرار دیاہے۔ تحریک لبیک یارسول اللہ کے سالار ناموس رسالت علامہ خادم رضوی‘ پیر محمد افضل قادری‘ پیر اعجاز اشرفی ودیگر نے اپنے بیان میں اظہار افسوس کرتے ہوئے کہا ہے کہ درگاہ سیہون شریف دھماکہ اسلام اور پاکستان کے خلاف خطرناک سازش ہے۔سانحہ داتا گنج بخش علی ہجویری لاھور،عبداللہ شاہ غازی کراچی‘ شاہ نورانی بلوچستان ودیگر مزارات کے ملزمان کو پکڑ کر عبرت ناک سزا دی ہوتی تو آج یہ خوارج جہنمی درگاہ سیہون کا رخ نہ کرتے۔ امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے سہون میں لعل شہباز قلندر کے مزار پر دہشت گردی کی ا س کاروائی کی شدید مذمت کی ہے اور کہا ہے کہ پے در پے دہشت گردانہ کاروائیاں ملک کو کمزور اور غیر مستحکم کر نے کی کوشش اور حکومت اور قانون نافذ کر نے والے اداروں کے لیے لمحہ فکریہ ہیں ۔جمعیت علماء پاکستان سندھ کے صدر علامہ سید عقیل انجم قادری نے زائرین پر خودکش بم حملہ سندھ حکومت کی نااہلی کاثبوت ہے، انہوں نے کہاکہ وفاقی وصوبائی وزراء اور دیگر حکومتی ذمہ داران اپنی نااہلیوں پر پردہ ڈالنے کے بجائے اپنی اپنی ذمہ داریوں پر توجہ دیں۔ مرکزی نائب صدر مفتی محمدعبدالعلیم قادری،شبیر ابوطالب، علامہ قاضی احمدنورانی صدیقی، محمدشکیل قاسمی،اسفندیارخان، محمدرفیق گجر، علامہ خلیل احمدنورانی، قاری رشید گولڑوی، مولاناضیاء الحسن قادری، عبدالغفارشیخ، پروفیسرانواراحمدشیخ، بابافخرالدین نورانی، قاری شمیم الدین، عبدالوحید یونس، قاری عبدالرشید نورانی، محمداکرم ،مولاناعبدالمتین نعیمی، مہتاب نورانی، حافظ شاہداللہ نورانی، مولانافقیرمحمد عطاری، حاجی سلمان شیخ، ظہیر خان شاہجہانپوری، قاری عبدالقدیر قادری ، ماسٹرعبدالحلیم نعیمی ودیگر نے بھی درگاہ لعل شہبازقلندرؒ پر خودکش بم دھماکے کی شدیدمذمت کی ہے۔پاکستان مسلم لیگ ن سندھ کے رہنما علی اکبر گجر‘ پاکستان مسلم لیگ ن‘ علماء مشائخ ونگ سندھ کے صدر صاحبزادہ اظہر ہمدانی‘شیعہ علماء کو نسل صوبہ سندھ کے صدر علامہ سید ناظر عباس تقوی اور نا ئب صدر و پولیٹیکل سیکر ٹری محمد یعقوب شہباز کا کہنا ہے کہ سہون شر یف میں لال شہبازقلندرکے مزارپر ہونے والے خودکش دھماکے کی شد ید الفاظ میں مزمت کر تے ہیں اور اس واقعے میں شہیداور زخمی ہونے والے خاندانوں سے دلی ہمدردی اور تعزیت کر تے ہیں دہشت گردوں نے اس ملک کو تباہی کے قر یب لا کر کھڑا کر دیا ہے ملک میں ہر طرف دہشت گردی کی فضاء چھائی ہوئی ہے اور ہماری حکومت اور ریاستی ادارے حالات کنٹرول کر نے میں ناکام نظر آتے ہیں شیعہ علماء کو نسل پا کستان کی جانب سے دہشت گردی کے اس واقعے کہ خلاف ملک بھر میں تین روزہ سوگ منایا جائے گا۔ ہم حکومت سے ایک بار پھر مطالبہ کرتے ہیں کہ کالعدم دہشت گرد جماعتوں کے خلاف ملک بھر میں بھر پور آپریشن کیا جائے ورنہ دہشت گردی کو ختم کرنا حکومت کے لئے بہت مشکل ثابت ہوگا ۔ جماعت اہلسنّت سند ھ کے امیر ،درگا ہ قادریہ جیلا نیہ خیر پو ر میر س کے سجاد ہ نشین پیر سید سردار علی شا ہ جیلا نی،صوبائی ناظم اعلی علا مہ محمد اکر م سعید ی نے سند ھ کے عظیم صو فی بز رگ حضرت سیدمحمدعثمان مروندی المعروف حضرت لعل شہباز قلندر کے مزار کے احاطے میںبم دھما کے کی شد ید مذ مت اور قیمتی انسا نی جا نو ں کے ضیا ع پر دکھ اور افسو س اور لو احقین سے تعز یت کا اظہا ر کر تے ہو ئے کہا کہ سند ھ میں دہشت گر دی صو با ئی حکو مت کیلئے سو الیہ نشا ن ہے اور مکمل ناکا می اور بے حسی کے متر ادف ہے ۔ جماعت اہلسنّت پا کستا ن مطا لبہ کر تی ہے کہ مز ارات بز رگا ن دین اوران سے متصل مساجد کے انتظام کیلئے ایک علیحد ہ ’’سنی اوقاف ‘‘قائم کیا جا ئے ۔ حضرت لعل شہباز قلندر کے مز ار پر دھما کہ کے خلاف تین رو ز ہ سو گ اور پورے سند ھ بھر میںجمعہ کو یو م احتجا ج اور مظاہر ے کئے جا ئیں گے مر کز ی مقامات میں دھر نے دئیے جا ئیں ۔ پاکستان ہند وکونسل کے سرپرستِ اعلیٰ اور ممبر قومی اسمبلی ڈاکٹر رمیش کمار وانکوانی نے درگاہ حضرت لعل شہباز قلندر سہیون شریف پر حملے کو انسانیت پر حملہ قرار دیا ہے۔ سپریم شیعہ علماء بوڈ کے سرپرست اعلیٰ و تحریک نفاذ فقہ جعفریہ کے سربراہ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا ہے کہ دہشت گرد روحانیت سے خوفزدہ ہیں لعل شہباز قلندر ؒ کی درگاہ سیہون شریف پر دہشت گردی اسلام کی روحانیت سندھ کی تہذیب اور امن آشتی کی تعلیمات پر حملہ ہے۔ آپریشن ضرب عضب کا دائرہ اندرون سندھ پنجاب و اسلام آباد میںبھی پھیلا یا جائے فوج ہی دہشتگردوں کا علاج کر سکتی ہے۔ آغا سید حامد علی شاہ موسوی نے کہا ک تمام عالمی وعلاقائی دہشتگردوں کے پیچھے اسلام دشمن قوتوں امریکہ بھارت اسرائیل کا ہاتھ ہے۔ تحریک لبیک یا رسول اللہ سندھ کے امیر مفتی غلام غوث بغدادی‘ کراچی ڈویژن کے امیر علامہ سید زمان علی جعفری‘ مفتی آصف عبداللہ قادری‘ علامہ احمد رضا امجدی بھی واقعہ کی مذمت کرنے والوں میں شامل ہیں۔
سہون دھماکہ/ردعمل