سہون حملہ بزدلانہ کارروائی ہے دہشتگرد مسلمان ہیں نہ ہی انسان مراد علی شاہ

سہون حملہ بزدلانہ کارروائی ہے دہشتگرد مسلمان ہیں نہ ہی انسان مراد علی شاہ

کراچی (وقائع نگار) وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے سیہون میں ہونے والے دھماکے کی سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے انھوں نے آئی جی سندھ پولیس اے ڈی خواجہ اور کمشنر حیدرآباد شاہد پرویز سے فون پر بات کرتے ہوئے اپنے حلقے میں ہونے والے دھماکہ کی تفصیلات معلوم کیں، پولیس اور ضلعی انتظامیہ کو جائے وقوع پر پہنچ کرزخموں کی ہر ممکن مدد کرنے کی ہدایت بھی کی۔ وزیراعلیٰ سندھ سید مرادعلی شاہ نے سیہون اسپتال میں ایمرجنسی نافذ کرتے ہوئے ڈاکٹرز کو ڈیوٹی پر حاضر رہنے کی بھی ہدایات کیں۔ وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا کہ یہ دہشتگرد نہ مسلمان ہیں نہ ہی انسان۔ انہوں نے اپنے حلقے کے اہم لوگوں کو زخمیوں کی بھرپور مدد کرنے کی ہدایت کی۔گورنر سندھ محمد زبیر عمر اور وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے سہون شریف درگاہ، لال شہباز قلندر پر دہشت گردی کو بزدلانہ حملہ قرار دیتے ہوئے اس کی سخت الفاظ میں مذمت کی ہے اور اسے انتہائی افسوس ناک واقعہ قرار دیا ہے گورنر سندھ اور وزیراعلیٰ نے اپنے الگ الگ بیانات میں واقعہ کو کھلی دہشت گردی او ربزدلانہ حملہ قرار دیا ہے اور اس کے ذمہ داروں کو جلد کیفر کردار تک پہنچانے کے عزم کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے زخمیوں کی جلد از جلد اسپتال منتقلی او ر مکمل علاج معالجے کی ہدایت کی ہے۔ سیہون بم دھماکے کے بعد وزیراعلیٰ سندھ کی ہدایت پر اسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی۔ وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہاکہ ہمارے پاس رات میں اڑنے والے ہیلی کاپٹر نہیں ہیں نواب شاہ اور جامشورو قریب ہیں وہاں سے جلد سیہون پہنچا جاسکتا ہے۔ انہوں نے ڈاکٹروں‘ نرسوں کو جلد از جلد وقوعہ پر پہنچانے کی ہدایت کی اور کہاکہ بہت افسوسناک واقعہ ہے۔ جامشورو اور نوابشاہ سے ڈاکٹروں‘ طبی عملے کی ٹیمیں بھیجی گئی ہیں اس قسم کے جائے وقوعہ کے لئے سیہون کے اسپتالوں میں سہولیات نہیں ہیں۔ میرے والد کے نام پر تعلقہ اسپتال ہے وہ فعال ہے۔
مراد علی شاہ