ٹارگٹ کلنگ‘ بھتہ خوری میں خاطر خواہ کمی ہوئی ‘ گورنر سندھ

  ٹارگٹ  کلنگ‘ بھتہ خوری  میں  خاطر  خواہ کمی ہوئی  ‘ گورنر سندھ

کراچی ( وقائع نگا ر ) وائی ایم سی  اسکول کے احاطے مین غیر قانونی تجارتی سرگرمیوں کا نوٹس لیتے ہوئے گورنر سندھ ڈاکٹر عشرت العباد خان نے  کمشنر کراچی کو فوری قانونی کا رروائی کی ہدایت جس پر کمشنر کراچی نے ہدایت پر عمل کرتے ہوئے قانونی چارہ جوئی اور دفعہ  144نافذ کرکے اس کو کسی بھی قسم کی غیر تدریسی سرگرمیوں پر پابندی لگا دی ہے جس کا جائزہ لینے کے لئے گورنر سندھ جمعرات کی شب وائی ایم سی پہنچے اس موقع پر ان کے ہمراہ کمشنر کراچی شعیب احمد صدیقی اور دیگر اعلیٰ حکام بھی موجود تھے ۔ گورنر سندھ نے وائی ایم سی اے کے منتظمین سے ملاقات کرکے ان سے تفصیلات حاصل کیں ۔ بعد ازاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے گورنر ڈاکٹر عشرت العباد خان نے کہا کہ وائی ایم سی کے میدان پر گذشتہ 10 ، 12 برس سے غیر قانونی طور پر شادی ہال اور دیگر سرگرمیاں جاری تھیں جس سے سارے معاملات خراب ہوئے۔ یہاں سے شادی ہال مسمار کرکے سیل اور دفعہ 144نافذ کردی گئی ہے او ر عمارت کو منتظمین کے حوالے کرکے پولیس بھی تعینات کردی  ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وائی ایم سی عیسائی کمیونٹی کی پراپرٹی ہے یہ ہمارے کرسچئین بھائیوں کا ادارہ ہے اور دوسرے بھی اس سے استفادہ حاصل کرتے ہیں۔ دریں  اثناء ڈاکٹر عشرت العباد خان نے کہا ہے کہ نوجوان پاکستان کا روشن مستقبل ہیں جہالت کے خاتمے ، تعلیم عام کرنے اور اطلاعات کے حصول و رسائی میں نوجوان اہم کردار ادا کرسکتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ نوجوان معاشرے میں کسی بھی مسئلے کی نشاندہی کریں میں آپ کے ساتھ چلوں گا اور جو ہو سکا کروں گا یہ ہمارے دین کی بھی تعلیم ہے کہ برائیوں کا ہر صورت خاتمہ کیا جائے نوجوان بھرپور حصہ لیں اور اپنی اونر شپ دیں ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایف ٹی سی میں یوتھ پارلیمنٹ کے زیر اہتمام یوتھ کنونشن 2015 ء سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ کنونشن میں سینیٹر عبد الحسیب خان ، رکن صوبائی اسمبلی ناصر حسین شاہ ، مسلم لیگ (ق) کے صوبائی صدر حلیم عادل شیخ ، سیکریٹری اسپورٹس اینڈ افیئرز لئیق احمد ، سی پی ایل سی کے چیف احمد چنائے ، معروف سماجی کارکن انصار برنی ، یوتھ پارلیمنٹ کے چیئرمین و بانی رضوان جعفر سمیت دیگر بھی شریک تھے ۔ گورنر نے  کہا اغوا برائے  تاوان میں بہت حد تک کمی آئی ہے بھتہ خوری میں 60 سے 70 فیصد تک کمی اور ٹارگٹ کلنگ میں خا طر خواہ کمی آئی۔انصار برنی نے کہا کہ سانحہ پشاور کے شہید بچے آج بھی زندہ ہیں ان بچوں نے ہمیں بھی نئی زندگی اور نیا پاکستان دیا ہے ۔