سندھ میں اراضی کا تمام ریکارڈ کمپیوٹرائزڈ کیا جائے : زرداری

سندھ میں اراضی کا تمام ریکارڈ کمپیوٹرائزڈ کیا جائے : زرداری

کراچی (سٹاف رپورٹر) سابق صدر آصف علی زرداری نے سندھ حکومت کو ہدایت دی ہے کہ فوری طور پر صوبے کی تمام زمین کا ریکارڈکمپیوٹرائزڈ کیا جائے تاکہ نہ صرف مالکانہ حقوق کے ریکارڈ محفوظ بنایا جائے بلکہ وصولی کا نظام بھی سندھ بینک سے منسلک کیا جائے۔ اس کمپیوٹرائزڈ وصولی سسٹم سے سرکاری ریونیو کلیکشن کئی گنا بڑھنے کی امید ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے وزیراعلیٰ ہائوس میں لینڈ ریکارڈ کی کمپیوٹرائزیشن کے حوالے سے اعلیٰ سطح کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس سے خطاب کرتے وزیر اعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ نے کہا صوبے کی زمین کے مکمل ریکارڈ کو کمپیوٹرائزڈ کرنے کا عمل آصف علی زرداری کے حکم پر 14 ستمبر 2011 کو 4997.45 ملین روپوں کی لاگت سے شروع کیا گیا جورواں سال جون میں مکمل ہو جائیگا۔ صوبے میں مجموعی طور پر 6000 دیہات ہیں جس میں سے ہم نے 2224 دیہوں کا ڈیٹا تصدیق کے لئے پروسیس کیا ہے جس میں سے 1237 دیہہ یا 55 فیصد کے تصدیق عمل مکمل ہو چکا ہے۔ صوبے میں ٹوٹل 3 کروڑ ایکڑ سے زائد زمین ہے جس میں سے 12.539 ملین ایکڑ عوام کی ملکیت جبکہ بقایا سرکاری زمین ہے۔ ممبر بورڈ آف ریونیو سید ذوالفقار شاہ نے بریفنگ دیتے کہا ریونیو ریکارڈ کی کمپیوٹرائزیشن کے لئے سندھی سافٹ وئیر تیار کیا گیا ہے۔