کراچی:9 افراد خونریزی کا شکار‘ تھانے پر2 بم حملے‘ رینجرز سے مقابلہ‘2 شدت پسند جاں بحق

کراچی (نوائے وقت رپورٹ+ کرائم رپورٹر+ این این آئی) کراچی میں فائرنگ اور پرتشدد واقعات میں دو خواتین سمیت9افراد ہلاک ہو گئے جبکہ اورنگی میں مومن آباد پولیس سٹیشن پر دو دستی بموں کے حملوں میں 5افراد شدید زخمی ہو گئے۔ واقعات کے مطابق  منگھوپیر تھانے کی حدود مائی گاڑی ناردرن بائی پاس ساکران روڈ پر 30سالہ محمد عارف کی گولیاں لگی تشدد زدہ لاش ملی۔ پولیس کے مطابق مقتول ایم کیو ایم یونٹ 131قصبہ علی گڑھ سیکٹر کا کارکن اور جمعرات سے لاپتہ تھا۔  میمن گوٹھ تھانے کی حدود سپرہائی وے ناگوری سٹاپ کے قریب سے 2افراد کی سر پر گولیاں لگی نعشیں ملیں۔ پولیس کے مطابق  مقتولین حلیے سے پٹھان معلوم ہوتے ہیں۔ پاکستان بازار تھانے کی حدود اورنگی ٹاؤن نمبر 13غازی گوٹھ گھر کے باہر بیٹھے 35سالہ محمد امین خان کو موٹر سائیکل سوار افراد نے گولیاں مارکر قتل کردیا۔ مقتول شٹرنگ کا کام کرتا تھا۔ سرسید کے علاقے انڈا مور کے قریب واقع ایک مکان سے خاتون عائشہ عمیر کی نعش ملی۔ پولیس کے مطابق نامعلوم افراد نے گھر میں گھس کر اسے قتل کیا۔ نبی بخش کے علاقے میں مسلح افراد نے رنچھوڑ لائن میں فائرنگ کر کے تنویر نامی چوکیدار کو ہلاک کر دیا۔ علاوہ ازیں سہراب گوٹھ پر مسلح ملزمان نے فائرنگ کر کے رینجرز کے ڈی ایس آر38سالہ صغیر کو زخمی کر دیا۔ منگھو پیر کے علاقے سے ایک خاتون کی نعش عباسی شہید ہسپتال پہنچائی گئی جسے فائرنگ کر کے قتل کیا۔ ادھر کورنگی صنعتی ایریا تھانے کی حدود ٹی اینڈ ٹی کالونی میں  ڈاکوؤں نے پولیس پر فائرنگ کردی جوابی فائرنگ کے نتیجے میں دونوں ڈاکو موقع پر ہلاک ہوگئے جبکہ ان ایک ساتھی فرار ہوگیا۔ ڈاکوؤں کے قبضے سے 2پستول اور مسروقہ سامان برآمد کرلیا گیا۔ تاحال دونوں کی شناخت نہ ہوسکی۔ دوسری جانب شرافی گوٹھ تھانے کی حدود مانسہرہ کالونی امام بارگاہ کے عقب میں گھر سے 40سالہ عرفان علی ولد منگن علی کی پھندا لگی لاش ملی۔ متوفی چار بچوں کا باپ اور آج کل بیروزگار تھا ۔ابراہیم حیدری تھانے کی حدود میں  ساحل سمندر میں 2افراد ڈوب گئے ۔جن میں سے ایک شخص کی لاش نکال لی گئی۔ دوسرے کی تلاش جاری تھی۔ جاں بحق ہونے والے شخص کا نام 28سالہ فیاض جبکہ لاپتہ شخص کا نام شاہد عالم معلوم ہوا ہے۔ ادھر اورنگی ٹائون نمبر 4میں مومن آباد پولیس سٹیشن پر نامعلوم افراد دستی بم کا حملہ کیا جب لوگ امدادی کارروائیوں کے لئے وہاں جمع ہوئے تو دوسرا بم پھینک دیا دونوں دھماکوں میں 5افراد زخمی جبکہ حملہ آور فرار ہو گئے۔ ادھر پریڈی پولیس نے ایمپریس مارکیٹ سے ڈکیتی کے الزام میں اپنے ہی 3اہلکاروں کو گرفتار کر لیا۔ علاوہ ازیں سپر ہائی وے پر رینجرز کے ساتھ فائرنگ کے تبادلے میں 2شدت پسند مارے گئے، فائرنگ کا سلسلہ کافی دیر جاری رہا۔ بتایا گیا ہے کہ رینجرز کی موبائل پر دہشت گردوں نے فائرنگ کی۔ ترجمان رینجرز کے مطابق ہلاک ہونیوالے شدت پسندوں کا تعلق طالبان سے تھا ان کے قبضے سے 2دستی بم، کلاشنکوف برآمد ہوئی۔ ادھر لیاری کے علاقوں گل محمد لین اور نوالین میں راکٹ اور دستی بموں سے حملوں میں 4افراد زخمی ہو گئے۔ علاوہ ازیں 200رینجرز اہلکاروں کو شہر کے حساس تھانوں میں تعینات کردیا گیا۔