تعلیم کے فروغ اور سکیورٹی کی فراہمی کے حکومتی دعوؤں کی دھجیاں خود کراچی میونسپل کارپوریشن اڑانے لگی جعفر طیار سوسائٹی میں قائم کے ایم سی اسکول کی بچیاں انتہائی مخدوش عمارت میں تعلیم حاصل کرنے پر مجبور ہیں

تعلیم کے فروغ اور سکیورٹی کی فراہمی کے حکومتی دعوؤں کی دھجیاں خود کراچی میونسپل کارپوریشن اڑانے لگی جعفر طیار سوسائٹی میں قائم کے ایم سی اسکول کی بچیاں انتہائی مخدوش عمارت میں تعلیم حاصل کرنے پر مجبور ہیں

سانحہ پشاور کے بعد ملک بھر کے سکولوں کی سکیورٹی سخت کر دی گئی ہے اور عمارتوں کی حالت زار کو بہتر بنانے پر بھی خصوصی توجہ دی جا رہی ہے مگر کراچی میں محکمہ کے ایم سی کی سرپرستی میں چلنے والے جعفر طیار سوسائٹی کے اسکول نمبر 6 کی عمارت نہایت بوسیدہ ہو چکی ہے جس کی وجہ سے اسکول کی بچیاں کسی بڑے سانحے سے دوچار ہو سکتے ہیںکے ایم سی گرلز اینڈ بوائز پرائمری اسکول نمبر 6 کی  بوسیدہ عمارت سے جہاں اساتذہ پریشان ہیں، وہیں طالبات بھی سخت خوف و ہراس کا شکار ہیں۔  دہشتگردوں کے حملوں سے بچاؤ کے لیے کراچی کے سکولوں کی حفاظت کو یقینی بنانا ہو گا کے ایم سی کے سکول کی طالبات کی جان بھی دوسرے سکولوں کے بچوں جتنی ہی مقدس ہے،، وزیر تعلیم سندھ کے قلم کی ذرا سی جنبش سے اِن بچوں کو تحفظ کا احساس دلایا جا سکتا ہے۔۔