جنرل کیانی پر خودکش حملہ چند گھنٹے پہلے ناکام بنایا گیا: گارڈین

جنرل کیانی پر خودکش حملہ چند گھنٹے پہلے ناکام بنایا گیا: گارڈین

کراچی (رپورٹ یوسف خان) آرمی چیف جنرل اشفاق پرویز کیانی کے قافلے پر خود کش حملے کی سکیم پر عمل درآمد سے چند گھنٹوں پہلے ناکام بنادی گئی۔ یہ انکشاف برطانوی اخبار دی گارڈین کی رپورٹ میں کیا گیا ہے ۔ اخبار کے مطابق گزشتہ جون میں 11 سو پونڈ وزنی دھماکہ خیز مادہ سے لدی گاڑی پکڑی گئی۔ یہ گاڑی آرمی چیف کے قافلے کو نشانہ بنانے کے لئے استعمال کرنے کی سکیم تھی۔ دی گارڈین کے نمائندے ایڈریان لیول کی رپورٹ میں اس بات پر حیرت ظاہر کی گئی کہ اتنی بڑی تعداد میں محسود نوجوان لڑکے خودکش بمبار کیوں بن رہے ہیں۔ گارڈین کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ محسود قبائل کے علاوہ پاکستان کے صوبے پنجاب میں مذہبی انتہاپسند آسانی سے مل جاتے ہیں ۔ ایسے علاقوں میں جہاں ٹیکسٹائل فیکٹریاں ہیں‘ پوٹاشیم کلوریٹ ٹیکسٹائل کلر کے لئے استعمال کیا جائے ۔ اسے پیٹرولیم جیلی یا برادہ کے ساتھ ملا کر دھماکہ خیز بنایا جاتا ہے۔ پاکستان میں دہشت گردی خلیج سے آنے والی رقم انتہا پسندی کے تصورات کے فروغ ، سعودی اور مصری ماہرین کی مدد سے کی جا رہی ہے۔ بے نظیر بھٹو کے قتل کے بعد تفتیشی ماہرین جائے واردات کو محفوظ کرنے میں ناکام رہے اور دیگر پریس فوٹوگرافرز اور شوقین لوگ خون اور ملبے پر آزادی سے پھرتے رہے پھر طاقتور پائپوں کی مدد سے بچی کھچی شہادتوں کو صاف کر دیاگیا ۔ ایک ایسے ملک میں جہاں فوج اور انٹیلی جنس اسٹیبلشمنٹ پر ملی بھگت سے کام کرنے کا الزام ہو دہشت گردی کے واقعات کی تفتیش میں برائے نام دلچسپی رہ جاتی ہے تاہم اب صدر آصف زرداری نے تہیہ کر رکھا ہے کہ وہ دہشت گردی ختم کرکے رہیں گے۔