ذوالفقار مرزا کیخلاف مقدمات فوجی عدالت میں بھیجے جا سکتے ہیں: قائم علی شاہ

ذوالفقار مرزا کیخلاف مقدمات فوجی عدالت میں بھیجے جا سکتے ہیں: قائم علی شاہ

کراچی(سٹاف رپورٹر+ نوائے وقت رپورٹ+ آئی این پی ) پیپلزپارٹی ارکان سندھ کونسل نے مطالبہ کیا ہے کہ پارٹی قیادت فہمیدہ مرزا اور حسنین مرزا سے اسمبلیوں کی رکنیت سے استعفیٰ لے۔ جمعرات کو پاکستان پیپلزپارٹی سندھ کونسل کا اجلاس پیپلزپارٹی سندھ کے صدر اور وزیراعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ کی صدارت میں وزیراعلیٰ ہائوس میں منعقد ہوا۔ پیپلز پارٹی سندھ کونسل کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے سید قائم علی شاہ نے ذوالفقار مرزا کو خوب تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے دل کی بھڑاس نکالی۔ انہوں نے کہاکہ ذوالفقار مرزا قانون کو ہاتھ میں لے رہے ہیں۔ ان کی دھمکیاں قانون کی گرفت میں آتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ذوالفقار مرزا نے ڈی ایس پی کو جان سے مارنے کی دھمکیاں دی ہیں۔ ہم سیاسی لوگ ہیں۔ کلاشنکوف کوف رکھ کر کسی کو ہراساں نہیں کرتے۔ ذوالفقار مرزا نے آصف علی زرداری اور فریال تالپور پر بے بنیاد الزامات لگائے ہیں۔ جھوٹے الزامات کی شدید مذمت کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ذوالفقارمرزا کس کے کہنے پر پارٹی قیادت کے خلاف بول رہے ہیں۔ سید قائم علی شاہ نے کہا ہے کہ ذوالفقار مرزا کے خلاف جو مقدمات انسداد دہشت گردی کی عدالت میں زیر سماعت ہیں وہ فوجی عدالت میں بھیجے جا سکتے ہیں ذوالفقار مرزا اپنے گریبان میں جھانکیں اور شریک چیئرمین آصف علی زرداری اور فریال تالپور کے خلاف الزام تراشیاں بند کریں بصورت دیگر پیپلز پارٹی کا کارکنان اسی زبان میں جواب دیں گے سندھ کونسل کے اجلاس میں ڈاکٹر ذوالفقار مرزا کے خلاف متفقہ قرارداد بھی پاس کی گئی اور آصف زرداری پر اعتماد کا اظہار کیا گیا۔ ماضی میں یہ الزامات پارٹی کے بانی ذوالفقار علی بھٹو اور شہید بے نظیر بھٹو پر لگتے رہے ہیں۔ کسی کو ریاست کو چیلنج کرنے کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔ لیکن جس طرح انہوں نے کلاشنکوف لہرائی اور ڈی ایس پی کو دھکے دیئے موبائل اور شیشہ توڑا اس کا انہیں جواب ضرور دینا ہوگا اس پر قانون حرکت میں آئے گا وہ اگر اتنے ہی بہادر ہیں تو عدالت میں کیوں گئے انہیں خود کو قانون کے سامنے پیش کر دینا چاہئے تھا قانون سے کوئی ماؤرا نہیں ہے۔ قائم علی شاہ نے کہا کہ ذوالفقار مرزا نے جس طرح کلاشنکوف لہرا کر دکانیں بند کرائیں پولیس افسران کو دھمکیاں دیں وہ دہشت گردی کے زمرے میں آتا ہے اب قانون حرکت میں آئے گا ذوالفقار مرزا کے خلاف مقدمات واپس نہیں لے سکتے۔ جو غلط کام کرے گا قانون کی گرفت میں آئے گا پولیس ان کے گھروں کے چاروں طرف نہیں کھڑی تھی ہم نے چادر اور چار دیواری کا خیال رکھا ذوالفقار مرزا نے دکانداروں کو ڈرایا اور دھمکایاں ایک جارج گیلوے پاکستان اور دوسرا برطانیہ میں ہے ڈی ایس پی کو جان سے مارنے کی دھمکیاں دیں جو درست نہیں کوئی جھوٹا الزام عائد نہیں کیا معاملہ عدالت میں ہے۔