کراچی: فائرنگ، حادثات میں 6 افراد ہلاک، متحدہ کے دفتر پر چھاپہ 4 کارکن گرفتار

کراچی: فائرنگ، حادثات میں 6  افراد ہلاک، متحدہ کے دفتر پر چھاپہ 4 کارکن گرفتار

کراچی(کرائم رپورٹر) کراچی کے مختلف علاقوں میں فائرنگ کے واقعات اور حادثات میں 6  افراد ہلاک اور 5 زخمی  ہو گئے۔ تفصیلات کے مطابق  سہراب گوٹھ کے علاقے میں سبزی مارکیٹ کے قریب موٹر سائیکل سواروں نے 35 سالہ عبدالکریم کو فائرنگ کرکے  ہلاک کردیا مقتول کوئٹہ کا رہنے والا تھا۔ ادھر سرجانی  ٹائون کے سیکٹر سیون اے میں نامعلوم افراد نے ایک نوجوان کو فائرنگ کرکے ہلاک کردیا جبکہ نیو کراچی کے علاقہ میں بشیر چوک کے قریب سے ایک نوجوان کی نعش ملی جسے تشدد کرکے ہلاک کیا گیا تھا۔ پولیس کے مطابق سرجانی ٹائون اور نیو کراچی میں مارے جانے والے دونوں نوجوانوں کی عمر20 اور25 سال کے درمیان تھی جبکہ  لیاقت آباد دس نمبر میں تیز رفتار بس نے سٹاپ  پر کھڑے افراد کو کچل ڈالا جس سے 3  افراد جاں بحق 5  شدید زخمی ہو گئے واقعہ کے بعد  مشتعل  ہجوم  نے بس جلا ڈالی۔ دریں اثنا کراچی پولیس نے مختلف جرائم میں ملوث 56 ملزموں کو گرفتار کرلیا جن میں 10 مفرور  بھی شامل ہیں۔ کراچی پولیس کے ترجمان کے مطابق ملزمان کے قبضے سے 17 پستول‘ 2 ہینڈ گرنیڈ‘ ایک بوتل شراب‘133 گرام ہیروئن اور942  گرام چرس برآمد کی گئی۔ ملزم شاہ زیب عرف شاہ زور بونیری کی گرفتاری کے بعد ایس ایس پی ملیر ڈاکٹر نجیب نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتایا کہ گرفتار ملزم کا تعلق ڈکیت گروپ سے ہے اور وہ رکن قومی اسمبلی بشیر  محمد بلوچ کے گن مین سمیت 3 پولیس اہلکاروں کی ٹارگٹ کلنگ میں بھی  ملوث ہے اس کے دو ساتھی پہلے ہی گرفتار ہوچکے ہیں۔ ملزم کا تعلق  کسی سیاسی جماعت  سے نہیں بلکہ  جرائم پیشہ گروہ سے ہے۔ ادھر رینجرز  نے شاہ فیصل  کالونی میں ایم کیو ایم  سیکٹر 6  کے دفتر  پر چھاپہ مار کر 4  افراد کو حراست میں لے لیا۔ دوسری طرف  رینجرز  نے کراچی آپریشن کا دائرہ کار مزید وسیع کرنے  اور آپریشن کا اگلا  مرحلہ شروع کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ دہشت گردوں،  ٹارگٹ کلرز،  بھتہ خوروں  کیخلاف  سخت ایکشن ہو گا۔  نجی ٹی وی کے مطابق ذرائع کے مطابق آپریشن  کے اگلے مرحلے میں دہشتگردوں کو کسی بھی طرح سہولت دینے والوں کیخلاف کارروائی  کا عندیہ دیا گیا ہے۔ رینجرز  کے تمام ونگز  کو جرائم پیشہ، دہشتگرد، ٹارگٹ کلرز کیخلاف  کارروائی  کا حکم دیا گیا ہے۔ آپریشن میں سرکاری اور نجی اداروں  میں موجود مافیا کیخلاف  بھی کارروائی کی جائے گی۔ واضح رہے کہ صوبائی ……ایپکس کمیٹی کے اجلاس میں رینجرز  کو کارروائی کی منظوری دی گئی تھی۔ علاوہ ازیں  کراچی میں امن و امان کی صورتحال کیلئے فرنٹیئر کانسٹیبلری  کے مستقل  قیام کا فیصلہ کر لیا گیا، نجی  ٹی وی  کے مطابق فرنٹیئر کانسٹیبلری  کے کراچی میں سدرن  ہیڈ کوارٹرز  کے قیام کی منظوری دیدی گئی۔ فرنٹیئر کانسٹیبلری  دس  ایکڑ رقبے  پر اپنا ہیڈ  کوارٹرز  بنائے گی۔  ہیڈ کوارٹرز  کیلئے اراضی کی قیمت وصول نہیں کی جائے گی۔  ڈسٹرکٹ  آفیسر ایف سی نے خط میں لکھا ہے کہ سدرن ہیڈ کوارٹرز  کیلئے فوری اراضی  الاٹ کی جائے۔ کراچی  کے علاقے گڈاپ  میں ہیڈ کوارٹرز بنایا جائے گا۔