کراچی: پرتشدد واقعات جاری، 6 افراد جاں بحق، پولیس موبائل پر بم حملہ

کراچی (کرائم رپورٹر+این این آئی+نوائے وقت رپورٹ) کراچی میں فائرنگ اور تشدد کے واقعات میں 6 افراد زندگی گنوا بیٹھے۔ قانون نافذ کرنے والے اداروں نے مختلف کارروائیوں میں گینگ وار کے کارندوں سمیت 160 ملزمان گرفتارکرلئے۔ تفصیلات کے مطابق کراچی کے علاقے ملیرہالٹ سے ایک شخص جبکہ سٹی ریلوے کالونی میں مکان سے مسکین نامی شخص کی نعش برآمد ہوئی، پولیس کے مطابق فائرنگ کرکے قتل کیا گیا۔ لیاقت آباد میں بھی نامعلوم افراد کی فائرنگ سے ایک شخص جاں بحق ہوگیا۔ ماڑی پور پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے گینگ وارکے دوکارندے دھرلئے،  دریں اثناء  پولیس کی بھاری نفری نے سہراب گوٹھ افغان خیمہ بستی سمیت اطراف کی رہائشی عمارتوں کا گھیراؤ کرلیا۔ سرچ آپریشن کے دوران سہراب گوٹھ میں 20سے زائد افراد کو حراست میں لے کر اسلحہ برآمد کر لیا ہے۔ ذرائع کے مطابق سپر ہائی وے  میں مسلح افغان آتے ہیں اور با آسانی لوٹ مار کر کے فرار ہو جاتے ہیں۔ مزاحمت پر گولیاں مارنے سے بھی دریغ نہیں کرتے۔ سپر ہائی وے پر افغان خمیہ بستی کے قریب اندرون ملک سے آنے اور جانے والی بسوں کے مسافروں کو بھی لوٹ مار روز کا معمول بن چکا ہے۔ اس کے علاوہ پولیس نے پاک کالونی  کے مختلف علاقوں میں لیاری گینگ وار کے ملزمان کی تلاش میں چھاپے مارے ہیں جبکہ اس کے علاوہ مومن آباد سے بھی 8افراد کو حراست میں لے لیا۔ ادھر راولپنڈی میں پولیس نے کراچی 4بھتہ خوروں کو گرفتار کرکے 4پستول اور 28گولیاں برآمد کر لیں۔ فیروز آباد میں پولیس نے چھاپہ مار کر لیاری گینگ وار کے بڑے مجرم امین بلیدی کے بھائی تنویر بلیدی جو 2پولیس افسروں سمیت 18افراد کے قتل میں ملوث تھے کو گرفتار کرکے 3دستی بم اور دیگر اسلحہ برآمد کر لیا دوسری طرف کنواری کالونی میں نامعلوم افراد نے پولیس موبائل پر دستی بم سے حملہ کیا جس سے دو اہلکار زخمی ہو گئے گارڈن کے علاقے پاکستان کوارٹرز کے قریب جعلی پیر نے تشدد کرکے ایک نوجوان کو مار ڈالا۔