ہم نے جمہوریت اور سیاسی نظام کے استحکام کےلئے کام کیا‘ خورشید شاہ

ہم نے جمہوریت اور سیاسی نظام کے استحکام کےلئے کام کیا‘ خورشید شاہ

سکھر (نامہ نگار)قومی اسمبلی میںقائد حزب اختلاف سید خورشید احمد شاہ نے کہا ہے کہ ان کی جماعت نے ملک میں جمہوریت اور سیاسی نظام کے استحکام کیلئے مفاہت کی سیاسست کو اپنا محور بنائے رکھا ، ملکی تاریخ میں پہلی بار پرا من انتقال اقتدار روبہ عمل میں آیا،اب بھی زمینی حقائق کو مد نظر رکھتے ہوئے مثبت و تعمیری اپوزیشن کا کردار ادا کرتے رہیں گے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے سکھر پریس کلب میں میٹ دی پریس پروگرام میں خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر سابق رکن سندھ اسمبلی ڈاکٹر نصراللہ بلوچ بھی موجود تھے۔ سید خورشید احمد شاہ نے مذید کہا کہ پاکستان پیپلز پارٹی نے اپنا وعدہ پورا کر دکھایا ہے، ماضی میں کبھی اس طرح کا پر امن انتقال اقتدار نہیں ہوا۔ انہوں نے کہا کہ محترمہ بے نظیر بھٹو شہید نے پاکستان کی ترقی عوام کی خوشحالی اور مستقبل کیلئے سسٹم کو مضبوط کرنے کا عزم کیا، چارٹر آف ڈیموکریسی کیا، مفاہمت کی سیاست کو اپنایا، پاکستان پیپلز پارٹی نے ان کے دئیے ہوئے وژن کو تسلسل دیا۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ حکومت نے پانچ برس انتہائی مشکل میں گزارے ہیں اور بڑے چیلنجز کا سامنا کیا تاہم 73ئکے آئین کی بحالی، دہشت گردی کا خاتمہ، اداروں کی عملداری کا قیام، پارلیمنٹ کی خود مختیاری کیلئے کام کیا، انکا کہنا تھا کہ ملکی پارلیمانی نظام میں پارلیمنٹ کو نہایت اہمیت حاصل ہے اور اس کا اہم کردار ادا کرایا، قانون سازی نہایت ضروری امر ہے۔ انہوں نے کہا کہ دہشتگردی کا تسلسل جاری ہے اسے جڑ سے نکالنا ہو گا، اس کیلئے سب کو ملک کر جدوجہد کرنا ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ کوئی حکومت بھی نہیں چاہے گی کہ دہشت گردی ہو اور اسے ناکامی کا سامنا کرنا پڑے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے ماضی کو بھلا کر مستقبل کی بہتری کیلئے مفاہمانہ رویہ اختیار کئے رکھا ہے، ملک میں بیروزگاری عام ہے، 25 لاکھ نوجوان بیروزگار ہیں، ملک کو مسائل کے بھنور سے نکالنے کیلئے عملی اقدامات کرنا ہوںگے۔