ایگزیکٹ سکینڈل کی تحقیقات میں مزید پیشرفت ہوئی ہے: ایف آئی اے

ایگزیکٹ سکینڈل کی تحقیقات میں مزید پیشرفت ہوئی ہے: ایف آئی اے

کراچی (نوائے وقت رپورٹ) ایف آئی اے نے کہا ہے کہ ایگزیکٹ جعلی ڈگری سیکنڈل کی تحقیقات میں مزید پیشرفت ہوئی ہے۔ ابھی کافی ڈیٹا کی ریکوری کی جا رہی ہے۔گرفتار ملازمین میں محمد رضوان، عمران احمد، عاطف حسین اور عدنان صبور شامل ہیں۔ سندھ ہائیکورٹ میں سیشن جج ساﺅتھ کے حکم کے خلاف ایگزیکٹ گروپ کی درخواست کی سماعت غیرمعینہ مدت تک ملتوی کر دی ہے۔ سیشن کورٹ ساﺅتھ کے جج نے ایف آئی اے کو ایگزیکٹ کے 34 اکاﺅنٹس تک رسائی کی اجازت دی تھی۔ اس فیصلے کو ایگزیکٹ نے سندھ ہائکیورٹ میں چیلنج کر رکھا ہے۔ سماعت جسٹس منیب احمد نے کی۔ایف آئی اے نے کراچی میں ایگزیکٹ کے مزید 4 ملازمین کو گرفتار لیا ہے۔ گرفتار ملازمین میں محمد رضوان، عمران احمد، عاطف حسین اور عدنان صبور شامل ہیں۔ ایف آئی اے ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ محمد رضوان ایسوسی ایٹ وائس پریزیڈنٹ، عمران احمد وائس پریزیڈنٹ ،عاطف حسین سوفٹ وئیر انجینئر اور عدنان ایسوسی ایٹ وائس پریزیڈنٹ ہیں۔ایف آئی اے نے عدالت سے چاروں ملزمان کا ایک روزہ ریمانڈ حاصل کر لیا ہے۔

ایگزیکٹ