بے گناہ افراد کے قتل میں ملوث دہشت گردوں کو لگام دی جائے‘ رابطہ کمیٹی

بے گناہ افراد کے قتل میں ملوث دہشت گردوں کو لگام دی جائے‘ رابطہ کمیٹی

کراچی(خصوصی رپورٹر) متحدہ قومی موومنٹ کی رابطہ کمیٹی نے مسلح دہشت گردوں کی فائرنگ سے ایم کیوایم کراچی مضافاتی آرگنائزنگ کمیٹی گڈاپ سیکٹر یونٹ ہندو آدم گوٹھ گل گوٹھ ٹھارو مینگل کے جوائنٹ یونٹ انچارج اختر علی گبول اور سچل سیکٹر رابطہ آفس چشتی نگر کے کارکن محمد انور میرانی کے بہیمانہ قتل کی سخت ترین الفاظ میں مذمت کی ہے اور کہا ہے کہ ایم کیوایم کے کارکنان سمیت دیگر افراد کی قتل و غارتگری میں ملوث دہشت گرد شہر کا امن سبوتاژ کرنا چاہتے ہیں ۔رابطہ کمیٹی نے صدر مملکت آصف علی زرداری ، وزیراعظم راجہ پرویز اشرف ، وفاقی وزیر داخلہ رحمان ملک ، گورنر سندھ ڈاکٹر عشرت العباد اور وزیراعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ سے مطالبہ کیا کہ مسلح دہشت گردوں کی فائرنگ سے ایم کیوایم گڈاپ سیکٹر کے جوائنٹ یونٹ انچارج اختر علی گبول اور ایم کیوایم سچل سیکٹر کے کارکن محمد انور میرانی کے سفاکانہ قتل کا سنجیدگی سے نوٹس لیاجائے ، ایم کیوایم کے کارکنان اور دیگر بے گناہ افراد کے قتل میں ملوث دہشت گردوں کو لگام دی جائے اور انہیں گرفتار کرکے قرار واقعی سزا دی جائے ۔ علاوہ ازیںحق پرست اراکین سندھ اسمبلی نے لیاری گینگ واردہشت گردوںکی جانب سے شہرمیںبڑھتی ہوئی جرائم کی وارداتوںکی سخت ترین الفاظ میں مذمت کی ہے اورمطالبہ کیاہے کہ کراچی کے شہریوںاورکاروباری طبقے کوجان ومال کاتحفظ فراہم کرنے کیلئے انہیںلیاری گینگ وارکے مسلح دہشت گردوںسے نجات دلائی جائے۔ایک بیان میںاراکین سندھ اسمبلی نے کہاکہ کراچی میںکالعدم پیپلز امن کمیٹی کے نام سے مشہورلیاری گینگ وارکے مسلح دہشت گردوں نے اولڈسٹی ایریاخصوصاًلیاری، کھارادراورماڑی پورسمیت دیگر مخصوص علاقوںمیں دہشت گردی،بھتہ خوری،اغواءبرائے تاوان،رہزنی وڈکیتیوںاور قتل وغارتگری جسے سنگین جرائم کابازارگرم کرکے ان علاقوںکو کراچی کے شہریوںکیلئے ”نوگوایریاز“بنارکھاہے۔ انہوںنے کہاکہ لیاری گینگ وارکے دہشت گردوںکی بارہامرتبہ واضح نشاندہی اورتمام ترثبوت شواہدپیش کرنے کے باوجوددہشت گردوںکے خلاف کوئی قانونی کاروائی نہیںکی جارہی جس سے واضح ہوتاہے کہ حکومت نے کراچی اور اس کے شہریوں کولیاری گینگ وارکے دہشت گردوں کے رحم وکرم پر چھوڑ دیاہے ۔
رابطہ کمیٹی