مناسب وقت پر شمالی، جنوبی وزیرستان میں فوجی آپریشن بھی کیا جائیگا: رحمن ملک

مناسب وقت پر شمالی، جنوبی وزیرستان میں فوجی آپریشن بھی کیا جائیگا: رحمن ملک

کراچی (آن لائن) وزیر داخلہ رحمن ملک نے کہا ہے کہ مناسب وقت آنے پر وفاقی حکومت افواج پاکستان کی مشاورت سے شمالی و جنوبی وزیرستان میں فوجی آپریشن کا فیصلہ کرے گی، بہت جلد غیر قانونی و غیر رجسٹرڈ سموں کو بند کردیا جائے گا ،حکیم اللہ محسود اگر سچے پاکستانی ہیں تو ملک کو غیر مستحکم کرنے والوں کے نام سامنے لائیں۔ ایف آئی اے کے اجلاس کے بعد صحافےوں سے بات چیت میں رحمن ملک نے کہا کہ ملالہ پر حملے کو شمالی وزیرستان میں ہونے والے ڈرون حملوں سے جوڑنے کا تاثر دیا گیا جسے دنیا کے سامنے زائل کردیا گیا ہے۔ انہوںنے کہا کہ شمالی و جنوبی وزیرستان میں فوجی آپریشن کا فیصلہ وفاقی حکومت افواج پاکستان سے مشاورت کے بعد ہی کرے گی اور جب مناسب وقت آئے گا تو شمالی و جنوبی وزیرستان میں فوجی آپریشن بھی کیا جائے گا۔انہوںنے کہا کہ حکیم اللہ محسود اس ملک میں ہی جوان ہوئے ہیں اور اس ملک کے مدارس سے انہوں نے تعلیم حاصل کی ہے اگر وہ سچے مسلمان اور پاکستانی ہیں تو قوم کے سامنے ان لوگوں کے نام لیکر آئیں جو باہر کے ممالک کیلئے کام کرتے ہوئے پاکستان کو غیر مستحکم کرنا چاہتے ہیں ،میں انہیں مکمل طور پر تحفظ اور تمام مقدمات سے استثنیٰ دوں گا۔ عوام حکیم اللہ محسود معاف کردیں گے اگر وہ صرف ملالہ پر حملہ کرنے والوں کا نام بتادیں۔ رحمٰن ملک نے کہا کہ احسان اللہ احسان کے سر کی جس دن سے دس کروڑ روپے قیمت مقرر کی ہے وہ غائب ہوگیا ہے ایسا محسوس ہوتا ہے کہ احسان اللہ احسان حکیم اللہ محسود کا بندہ نہیں ہے، حکومت دہشت گردی کے خلاف جو بھی اقدمات کررہی ہے وہ مستقبل میں ملک کو محفوظ بنانے کیلئے ہی کیئے جارہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ اگر آج صدر کے پاس وہ اختیارات ہوتے جنہیں انہوں نے اٹھارویں اور بیسویں ترمیم کے ذریعے پارلیمنٹ کو منتقل کردئے ہیں تو انہیں پٹیشنوں کا سامنا نہ کرنا پڑتا۔ انہوں نے کہا اب سم مارکیٹ یا گلی محلہ کے بازار سے نہیں بلکہ شناختی کارڈ پردرج پتے پر ہی گھر کی دہلیز پر حاصل کی جا سکے گی۔ انہوں نے کہا کہ انہوں نے سپریم کورٹ میں کراچی امن و امان کیس میں فریق بننے کی درخواست دے دی ہے عدالت جب بھی انہیں بلائے گی وہ پیش ہوکر ایسی چیزوں کو ریکارڈ کا حصہ بنائیں گے جس سے مستقبل میں فائدہ اٹھایا جاسکے گا۔