کراچی: ڈاکٹر سمیت 2 افراد قتل، ڈبل سواری پر 2 روز کیلئے پابندی

کراچی (کرائم رپورٹر+ وقائع نگار+ نوائے وقت رپورٹ) کراچی میں پرتشدد واقعات کا سلسلہ جاری جمعرات کو ڈاکٹر سمیت دو افراد کو موت کے گھاٹ اتاردیا گیا جبکہ فائرنگ سے خاتون سمیت 8 افراد زخمی ہوگئے جبکہ محکمہ داخلہ کی جانب سے کراچی سمیت 5 شہروں میں دہشت گردی کے پیش نظر ڈبل سواری پر پابندی عائد کر دی گئی ہے۔ تفصیلات کے مطابق بلدیہ ٹاﺅن کے علاقے میں تانبہ ہال کے نزدیک موٹر سائیکل سواروں کی فائرنگ سے ڈاکٹر احسن علی جاںبحق اور ان کا ڈرائیور 30سالہ رشید زخمی ہوگیا۔ ڈاکٹر احسن علی کو موٹر سائیکل پر سوار دو مسلح افراد نے اسوقت نشانہ بنایا جب وہ کلینک کے سامنے اپنی کار میں بیٹھ رہے تھے۔ قبل ازیں گلشن غازی میں المکہ مسجد کے احاطے سے ایک شخص کی نعش ملی جسے گلا کاٹ کر ہلاک کیا گیا تھا۔ وہ سوات کا رہنے والا تھا اور تبلیغی جماعت کے کارکنوں کے ہمراہ کراچی آیا تھا۔ علاوہ ازیں محکمہ داخلہ سندھ کی جانب سے ربیع الاول کے موقع پر سندھ کے شہر کراچی‘ حیدرآباد‘ سکھر‘ خیرپور اور جامشورو میں 2 روز کیلئے ڈبل سواری پر پابندی عائد کی گئی ہے۔ ڈبل سواری پر پابندی کا اطلاق آج رات 12 بجے سے ہوگا سندھ حکومت کی جانب سے ڈبل سواری پر پابندی کے ساتھ ساتھ اسلحہ لے کر چلنے پر بھی پابندی عائد کی گئی ہے۔ محکمہ داخلہ سندھ کی جانب سے سندھ میں موبائل فون سروس بند کرنے کی سفارش کی ہے۔ علاوہ ازیں کراچی کے مختلف علاقوں میں آتشزدگی کے واقعات‘ قیمتی فرنیچر اور روئی کی گانٹھیں جل کر راکھ ہو گئیں۔ گلستان جہر میں کامران چورنگی کے نزدیک فرنیچر مارکیٹ میں اچانک آگ لگی جس کے نتیجے میں لاکھوں روپے مالیت کا فرنیچر جل کر تباہ ہوگیا تاہم مارکیٹ میں موجود 30 گیس سلنڈر اور آئل کے ڈرم بچا لئے گئے۔ ادھر سائٹ کے علاقے میں آتشزدگی کے باعث روئی کی کئی گانٹھیں جل گئیں۔ علاوہ ازیں ترجمان رینجرز کے مطابق لیاری گلستان سے گینگ وار کے چار ملزم گرفتار کر لئے۔ ملزمان سے اسلحہ برآمد کر لیا گیا۔
2 افراد قتل