پارلیمنٹ کا کمیٹی سسٹم توقعات کے مطابق نتائج حاصل کرنے میں ناکام

پارلیمنٹ کا کمیٹی سسٹم توقعات کے مطابق نتائج حاصل کرنے میں ناکام

اسلام آباد (شفقت علی/دی نیشن رپورٹ) پارلیمنٹ میں قائم کمیٹی سسٹم بظاہر توقعات کے مطابق نتائج حاصل کرنے میں ناکام رہا ہے کیونکہ بعض وجوہات کی بنا پر ایگزیکٹو نے ان پر کم ہی عملدرآمد کیا ہے، دنیا بھر میں پارلیمانی کمیٹیاں حکومتی آپریشنز کی نگرانی کرتی ہیں، وہ نازک معاملات کی نشاندہی کرتی ہیں، اطلاعات وصول کر کے ان کا تجزیہ کرتی ہیں اور قانونی اداروں کیلئے گائیڈ لائنز یا مسائل کا حل طے کرتی ہیں، سینٹ اور قومی اسمبلی کی کمیٹیوں کے متعدد ارکان نے اس خیال کا اظہار کیا ہے کہ یہ اپنا مقصد کھو بیٹھی ہیں اور اب یہ محض دوستوں کو اکاموڈیٹ کرتی اور ان کیلئے آسانیاں پیدا کرتی ہیں۔ اس حوالے سے کامل علی آغا نے کہا ہے کہ حکومت سفارشات کو نظر انداز کرتی ہیں ، سراج محمد خاں کا کہنا ہے کہ وسائل کی کمی ، مطالبات کی آئیڈیل نوعیت نے عملدرآمد کو مشکل بنا دیا ہے، روحیل اصغر نے کہا ہے کہ کمیٹی کی سفارشات بائنڈنگ نہیں ہیں۔