دہشت گردوں کو ہتھیار ڈال کر حکومتی عملداری تسلیم کرنا ہوگی : زرداری

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک/ ایجنسیاں) صدر آصف علی زرداری کی صدارت میں پیپلزپارٹی کا اہم اجلاس ہوا جس میں وزیراعظم یوسف رضا گیلانی‘ وفاقی وزراء اور پیپلزپارٹی کے ارکان قومی اسمبلی اور سینٹ نے شرکت کی۔ اجلاس میں ملکی سیاسی صورتحال‘ سوات اور مالاکنڈ کے متاثرین کی دیکھ بھال اور بحالی کے علاوہ دیگر معاملات پر بھی غور کیا گیا۔ اس موقع پر صدر آصف علی زرداری نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پیپلزپارٹی آمروں کی طرف سے آئین میں لائی گئی غیرضروری شقیں ختم کرنے کیلئے پرعزم ہے۔ دہشت گردوں کو ہتھیار ڈال کر حکومتی عملداری تسلیم کرنا ہوگی۔ حکومتی رٹ چیلنج کرنے والوں کاخاتمہ کردیا جائے گا۔ حکومتی بالادستی قبول نہ کرنے پر دہشت گردوں کو کچل دیں گے۔ سرحد اسمبلی کی ارکان کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے صدر زرداری نے منتخب عوامی نمائندوں پر زور دیا کہ وہ عسکریت پسندوں‘ انتہا پسندوں کی مذموم سرگرمیوں کے بارے میں عوام میں شعور اور آگہی پیدا کریں۔ وفد شازیہ خان اور سنجیدہ یوسف پر مشتمل تھا۔ ملاقات میں عسکریت پسندوں کے خلاف جاری آپریشن‘ بے گھر افراد کی بحالی اور خواتین کی بہبود اور ترقی کیلئے حکومت کی جانب سے کیے جانے والے اقدامات پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ اس بات پر زور دیا کہ منتخب عوامی نمائندے بے گھر افراد کی بحالی کیلئے متحرک کردار ادا کریں اور عوام میں عسکریت پسندوں کے خلاف شعور پیدا کریں۔ شازیہ خان اور سنجیدہ یوسف نے خواتین کی ترقی کیلئے صدر کو تجاویز سے آگاہ کیا۔