پاکستان جان کیری کے دورے میں سٹرٹیجک مذاکرات دوبارہ شروع کرنے کی کوشش کریگا

پاکستان جان کیری کے دورے میں سٹرٹیجک مذاکرات دوبارہ شروع کرنے کی کوشش کریگا

اسلام آباد/ لندن (آئی این پی) پاکستان امریکی وزیرخارجہ جان کیری کے دورہ کے دوران پاکستان امریکہ سٹرٹیجک ڈائیلاگ دوبارہ شروع کرنے کی کوشش کریگا۔ اتوار کو برطانوی نشریاتی ادارے نے دفترِ خارجہ کے ترجمان اعزاز احمد چوہدری کے حوالے سے بتایا کہ دونوں ممالک کے درمیان سٹرٹیجک ڈائیلاگ کو نومبر 2011ءمیں سلالہ چیک پوسٹ پر حملے کے بعد بند کر دیا گیا تھا جسے دوبارہ شروع کرنے کی کوشش کی جائیگی۔ اعزاز احمد چوہدری نے کہا کہ پاکستان امریکہ سٹرٹیجک ڈائیلاگ کرنے کیلئے دونوں ممالک کے پانچ ورکنگ گروپس تھے۔ اگرجان کیری کے دورے کے دوران سٹرٹیجک ڈائیلاگ دوبارہ شروع کرنے پر اتفاق ہو گیا تو وہ فوری طور پر ان ورکنگ گروپس کی ملاقاتیں کرائیں گے۔ پاکستان نے گزشتہ برس 26 نومبر کو سلالہ چیک پوسٹ پر امریکی ہیلی کاپٹرز کے حملے میں 24 فوجیوں کی شہادت کے بعد افغانستان میں تعینات نیٹو افواج کو پاکستان کے راستے تیل اور دوسری رسد کی فراہمی روکدی تھی۔ اسکے علاوہ بلوچستان میں امریکہ کے زیراستعمال شمسی ائر بیس کو خالی کرایا گیا تھا۔خیال رہے کہ مسلم لیگ (ن) کے اقتدار میں آنے کے بعد یہ کسی بھی بڑے امریکی عہدیدار کا پہلا دورِہ پاکستان ہوگا۔ جان کیری کے دورہ اسلام آباد کے موقع پر افغانستان میں قیام امن کے عمل کو آگے بڑھانے پر بھی بات چیت ہوگی۔ پاکستان، افغانستان میں قیامِ امن کوششوں میں کردار ادا کرنے کی بات کرتا رہا ہے۔ وزیراعظم نوازشریف کے خارجہ امور اور قومی سلامتی کے خصوصی مشیر سرتاج عزیز نے کابل کے اپنے حالیہ دورے کے دوران کہا تھا کہ اگر افغان رہنما چاہیں تو پاکستان افغانستان میں استحکام کیلئے افغان دھڑوں کے درمیان مذاکرات میں مدد دینے کیلئے تیار ہے۔