گلگت بلتستان: گندم کی 3 ر وپے کلو سبسڈی بحال، قیمت پھر 11 روپے ہوگئی

گلگت بلتستان: گندم کی 3 ر وپے کلو سبسڈی بحال، قیمت پھر 11 روپے ہوگئی

اسلام آباد (آئی این پی) وزیراعظم نواز شریف نے گلگت بلتستان میں گندم کی فراہمی پر ختم کی گئی 3 روپے فی کلو کی سبسڈی بحال کرنے کی منظوری دیدی، اب گلگت بلتستان کو گندم 14 روپے کی بجائے 11 روپے فی کلو فروخت کی جائے گی۔ وفاق کو سالانہ 6 ارب 10 کروڑ کی رقم سبسڈی کی مد میں پاسکو کو دینا پڑے گی۔ یہ اعلان پیر کو وفاقی وزیر امور کشمیر و گلگت بلتستان چوہدری برجیس طاہر نے وزیراعلیٰ گلگت بلتستان سید مہدی شاہ کے ہمراہ مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ وزیر امور کشمیر نے کہا کہ حکومتی اور عوامی دونوں کمیٹیوں کے درمیان مذاکرات کے ذریعے سبسڈی بحران حل کرنے کیلئے مشاورت کے نتیجے میں طے ہوا کہ حکومت (ن) لیگ کے اقتدار سنبھالنے کے وقت ملنے والی سبسڈی بحال کرے جس کے تحت گندم کی قیمت 14 روپے کی جگہ 11 روپے بنتی ہے۔ نواز شریف نے سمری منظوری کرتے ہوئے گلگت بلتستان کو 14 روپے کی جگہ 11 روپے فی کلو گندم فراہم کرنے کے احکامات جاری کردیئے ہیں جن پر آج سے عمل درآمد شروع ہوجائے گا۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت پاکستان کے اکثر دور دراز علاقوں میں گندم 51 روپے فی کلو فروخت ہورہی ہے جبکہ چترال میں 56 روپے اور کوہستان میں گندم 55 روپے فی کلو دستیاب ہے لیکن گلگت بلتستان کی خصوصی دفاعی پوزیشن اور جغرافیائی اہمیت کے پیش نظر گندم پر 3 روپے مزید سبسڈی فراہم کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ اس موقع پر وزیراعلیٰ مہدی شاہ نے کہا کہ وزیراعظم اور وزیر امور کشمیر نے جس توجہ سے سبسڈی کا مسئلہ حل کرایا اس پر جی بی کے عوام، سیاسی قیادت اور دونوں کمیٹیوں کی جانب سے انکا شکر گزار ہوں۔ جی بی میں پی پی پی کی حکومت کو وفاقی حکومت سے کوئی شکایت نہیں نہ وفاق سے وہاں کوئی مداخلت کی جارہی ہے۔