نوازشات کرکے آسامیاں تخلیق کی جاتی رہیں تو ملک کیسے چلے گا: چیف جسٹس

اسلام آباد (آئی این پی) سپریم کورٹ میں ڈاکٹر فائزہ کی عارضی تقرری کے حوالے سے سیکرٹری کیڈ نے بتایا ہے کہ وزیراعظم کے حکم پر تمام کنٹریکٹ افسران کے کیسز کی چھان بین شروع کردی گئی ہے۔ ڈاکٹر فائزہ کی تقرری قواعد و ضوابط کے برعکس کی گئی تھی۔ سابقہ حکومت نے گزشتہ سال ہزاروں افراد کو قواعد و ضوابط کے برعکس کنٹریکٹ پر بھرتی کیا تاہم موجودہ وزیراعظم کے حکم پر تمام کنٹریکٹ افسران کی تقرریوں کا اسٹیبلشمنٹ ڈویژن میں جائزہ لیا جارہا ہے۔ سیکرٹری کیڈ نے عدالت کو بتایا کہ ڈاکٹر پاکیزہ کےلئے قواعد و ضوابط کے برخلاف خصوصی آسامی تخلیق کی گئی جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ اگر اسی طرح نوازشات کرکے آسامیاں تخلیق کی جاتی رہیں تو ملک کیسے چلے گا۔ عدالت نے مقدمے کی مزید سماعت 18 نومبر تک تک ملتوی کرتے ہوئے اسٹیبلشمنٹ ڈویژن سے رپورٹ طلب کرلی۔